رسائی کے لنکس

بالی وُوڈ کی پہلی ’پارو‘ سُچترا سین چل بسیں


فلم ’آندھی‘ میں سُچترا نے خاتون سیاستدان آرتی دیوی کا کردار کیا تھا۔ اس کردار کے بارے میں کہا گیا کہ وہ سابق وزیراعظم اندرا گاندھی پر بنایا گیا ہے اور اسی بات کو بنیاد بنا کر فلم کی نمائش پر پابندی عائد کردی گئی۔

’دیوداس‘ بھارتی سینما کی ایک ایسی فلم ہے جو بلیک اینڈ وائٹ دور سے آج کے ہائی ٹیک دور تک کئی مرتبہ بنائی جا چکی ہے۔ پہلی مرتبہ 1955ء میں جب دیوداس بنائی گئی تو اس میں’پارو‘ کا کردار ادا کرکے شہرت کی بلندیوں کو چھونے والی اداکارہ تھیں سُچترا سین جو جمعہ کو ممبئی کے ایک اسپتال میں اس دنیا سے چل بسیں۔ انہیں کچھ روز قبل سانس کی تکلیف کے باعث اسپتال میں داخل کیا گیا تھا۔

سن 1931ء میں اپریل کی 6 تاریخ کو ایک بنگالی خاندان میں جنم لینے والی سُچترا سین نے بہت سی ایوارڈ وننگ بنگالی اور ہندی فلموں میں لاجواب اداکاری سے اپنا نام اور مقام بنایا۔

انہوں نے 1952ء میں بننے والی بنگلہ فلم ’شیش کوٹھے‘ میں پہلی مرتبہ کام کیا لیکن یہ فلم کبھی ریلیز نہ ہو پائی۔ اُن کی اگلی فلم بھی بنگلہ زبان میں تھی اور اس کا نام تھا ’شیرے چتور‘۔ اس فلم نے ریلیز ہوتے ہیں باکس آفس پر کامیابی کے جھنڈے گاڑ دیئے۔

اس فلم میں ہیرو کا کردار ادا کرنے والے اتم کمار تھے جن کے ساتھ ان کی جوڑی سلور اسکرین کی ’جادوئی جوڑی‘ کہلائی۔

سُچترا کی کامیابیوں کے سفر کا نقطہ عروج تھا ’پارو‘ کا کردار، جس نے انہیں 1955ء میں بہترین اداکارہ کا ایوارڈ دلوایا۔ سن ساٹھ اور ستر کے عشرے میں بنگالی سینما میں سُچترا سین کا جادو سر چڑھ کر بول رہا تھا۔ وہ بالی وُوڈ کی پہلی اداکارہ تھیں جن کے کام کو عالمی سطح پر پذیرائی حاصل ہوئی اور انہیں ماسکو فلم فیسٹول میں ایوارڈ سے نوازا گیا۔

ہندی سینما میں سُچترا سین کے کیرئیر میں 1975ء میں بنی فلم ’آندھی‘ اہم سنگ ِمیل ثابت ہوئی۔ فلم میں سوچترا نے خاتون سیاستدان آرتی دیو ی کا کردار کیا جس کے بارے میں کہا گیا کہ وہ سابق وزیراعظم اندرا گاندھی پر بنایا گیا ہے اور اسی بات کو بنیاد بنا کر فلم کی نمائش پر پابندی عائد کردی گئی۔

’آندھی‘ فلم 1977ء میں حکومت تبدیل ہونے کے بعدریلیز کی گئی۔ ’آندھی‘ میں سُچترا سین کے ہیرو کا کردار ادا کرنے والے سنجیو کمار کو بہترین اداکار کا ایوارڈ ملا اور سُچترا کو بہترین اداکارہ کے لئے نامزد کیا گیا۔

وہ ایک بار پھر میڈیا ہیڈلائنز کا مرکز 2005ء میں بنیں جب انہوں نے دادا صاحب پھالکے ایوارڈ لینے سے انکار کیا۔ اس کے بعد وہ رفتہ رفتہ گوشہ نشین ہوتی چلی گئیں۔

بھارتی اخبار ’ڈیلی بھاسکر‘، ’این ڈی ٹی وی‘ اور ’سی این این، آئی بی این‘ کے مطابق سُچترا سین کی کامیاب فنی زندگی کے برعکس ان کی نجی زندگی مشکلات کا شکار رہی۔ شہرت کی قیمت انہیں اپنی شادی کی ناکامی کی صورت میں ادا کرنی پڑی۔

سُچترا سین نے اپنی ایک بیٹی اداکارہ مون مون سین اور نواسیوں ماڈلز اور ایکڑیسز ریما سین اور ریا سین کو سوگوار چھوڑا ہے۔
XS
SM
MD
LG