رسائی کے لنکس

تائیوان: چین کے ساتھ تجارتی معاہدے پر مظاہرے جاری


(فائل فوٹو)

(فائل فوٹو)

حکمران جماعت کی پالیسی کمیٹی کے سربراہ لین ہونگ چی نے صحافیوں سے گفتگو میں کہا کہ مظاہرین تائیوان کی جمہوریت کو نقصان پہنچا رہے ہیں۔

تائیوان اور چین کے درمیان متنازع تجارتی معاہدے کے خلاف مظاہرہ کرنے والے طلبہ نے پارلیمان پر جمعرات کو بھی اپنا قبضہ برقرار رکھا۔

طلبہ منگل رات گئے پارلیمان کی عمارت میں گھسے اور پولیس کی طرف سے انہیں وہاں سے ہٹانے کی کوششوں کو پسپا کرتے آئے ہیں۔

مظاہرین کا کہنا ہے کہ حکومت تجارتی معاہدے کا تفصیلی جائزہ لے جو کہ ان کے بقول تائیوان میں کام کرنے والوں کے لیے خطرہ ہے۔

حزب اختلاف بھی اس معاہدے سے پریشان ہے کہ اس سے چین کے تائیوان پر بڑھتے ہوئے اثرورسوخ میں مزید اضافہ ہوگا۔

حکمران جماعت کیومنگٹانگ کی طرف سے اس معاہدے کے تفصیلی جائزے کے وعدے سے انحراف پر یہ مظاہرے شروع ہوئے۔

جماعت کی پالیسی کمیٹی کے سربراہ لین ہونگ چی نے صحافیوں سے گفتگو میں کہا کہ مظاہرین تائیوان کی جمہوریت کو نقصان پہنچا رہے ہیں۔

رواں ہفتے حکمران جماعت نے اس معاہدے کے ابتدائی جائزے کی منطوری دی جس سے چین اور تائیوان کی کمپنیاں دونوں ملکوں میں سرمایہ کاری میں اضافہ کر سکیں گی۔
XS
SM
MD
LG