رسائی کے لنکس

’’طالبان بات چیت میں شمولیت کا فیصلہ جلد کریں گے‘‘


’’طالبان بات چیت میں شمولیت کا فیصلہ جلد کریں گے‘‘

’’طالبان بات چیت میں شمولیت کا فیصلہ جلد کریں گے‘‘

طالبان رہنما افغانستان کی حکومت کے ساتھ امن مذاکرات میں شامل ہونے کے بارے میں جلد اپنے فیصلے کا اعلان کریں گے۔ عسکریت پسندوں کے ترجمان قاری محمد یوسف نے ذرائع ابلاغ کو دیے گئے ایک بیان میں کہا ہے کہ فی الوقت وہ امن بات چیت کے بارے میں مزید کچھ بتانے سے قاصر ہیں۔

ایک روز قبل لندن میں ہونے والی بین الاقوامی کانفرنس میں عالمی رہنماؤں نے اعتدال پسند اور تشدد کی راہ کو خیر آباد کہنے والے طالبان عسکریت پسندوں کو قومی مفاہمتی کوششوں میں شامل کرنے کے صدر حامد کرزئی کے منصوبے کی حمایت کا اعلان کیا تھا۔

اجلاس میں اس منصوبے کو عملی جامہ پہنانے کے لیے 50 کروڑ ڈالرز کاایک خصوصی فنڈ قائم کرنے کا فیصلہ بھی کیا گیا ہے اور یہ رقم ان طالبان جنگجوؤں کی سماجی بحالی پر خرچ کی جائے گی جو ہتھیار پھینک کرپر امن زندگی گزارنے کے خواہش مند ہوں گے۔

لندن کانفرنس کے موقع پر یہ اطلاعات بھی سامنے آئی ہیں کہ بعض اعلیٰ طالبان رہنماؤں نے افغانستان کے لیے اقوام متحدہ کے خصوصی نمائندے کائے آئیڈہ کے ساتھ اس ماہ دوبئی میں خفیہ مذاکرات کیے تھے۔

لیکن کابل میں اقوام متحدہ کے مشن کے ترجمان علیم صدیقی نے ان اطلاعات کی تردید یا تصدیق کرنے سے گریز کرتے ہوئے صرف اتنا کہا ہے کہ ” کائے آئیڈہ نے نہ تو ماضی میں کبھی طالبان سے اپنے رابطوں پر تبصرہ کیا ہے اور نہ ہی اب وہ ایسا کرنے جارہے ہیں“۔

فرانسیسی خبر رساں ایجنسی کےمطابق دوبئی میں ہونے والی بات چیت میں حصہ لینے والے طالبان رہنماؤں کے ناموں کو فی الحال راز میں رکھا گیا ہے تاہم اقوام متحدہ کے ایک عہدے دار نے دعویٰ کیا ہے کہ جن لوگوں سے مذاکرات کیے گئے وہ افغانستان میں جاری عسکری تحریک کے ایک سرگرم رکن ہیں۔ اس عہدے دار کے بقول ملاقات کی درخواست بھی انھیں طالبان رہنماؤں نے کی تھی جس کی تفصیلات سے افغان حکومت کو آگاہ کر دیا گیا ہے اور اُمید ہے وہ اس موقع کا فائدہ اٹھائے گی۔

لندن میں ہونے والے اجلاس میں صدر کرزئی نے سعودی ارب اور پاکستان پر زور دیا تھا کے طالبان کے ساتھ مفاہمت کے عمل کو شروع کرنے کی کوششوں میں یہ دونوں ملک افغانستان کی مدد کریں۔ لیکن سعودی وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ جب تک طالبان القاعدہ سے تعلق منقطع نہیں کرتے سعودی عرب اس سلسلے میں کوئی قدم نہیں اٹھائے گا۔

XS
SM
MD
LG