رسائی کے لنکس

دہشت گردی کا 'خطرہ'، امریکی شہریوں کے لیے انتباہ جاری


نیویارک میں جارج واشنگٹن پل پر ٹریفک کا ایک منظر

نیویارک میں جارج واشنگٹن پل پر ٹریفک کا ایک منظر

ایک اندازاے کے مطابق یوم تشکر کی تعطیلات میں چار کروڑ 69 لاکھ افراد 50 میل یا اس سے زائد فاصلے کا سفر کریں گے، جو کہ گزشتہ برس اس دوران محو سفر لوگوں کی تعداد سے تین لاکھ زائد ہے۔

امریکہ کے محکمہ خارجہ نے دنیا بھر میں اپنے شہریوں کے لیے دہشت گردی کے خطرے کے پیش نظر انتباہ جاری کیا ہے۔

انتباہی بیان میں کہا گیا کہ "تازہ ترین معلومات یہ ظاہر کرتی ہیں کہ داعش، القاعدہ، بوکو حرام اور دیگر دہشت گرد گروپوں نے متعدد علاقوں میں دہشت گرد حملوں کو منصوبہ بنایا ہے۔"

وفاقی تحقیقاتی ادارے "ایف بی آئی" کے مطابق امریکہ کے لیے دہشت گرد حملے کا کوئی خاص یا مصدقہ خطرہ نہیں ہے، لیکن قانون نافذ کرنے والے مقامی اور وفاقی اداروں کے اہلکار پوری طرح سے چوکنا ہیں۔

امریکہ میں ’تھینکس گوینگ ڈے‘ یعنی یوم تشکر اور پھر بلیک فرائڈے کے تناظر میں لوگوں کی ایک بڑی تعداد خریدوفروخت اور تعطیلات منانے کے لیے گھروں سے نکلتے ہیں اور مختلف مقامات کا سفر کرتے ہیں۔

ٹرانسپورٹیشن سکیورٹی ایڈمنسٹریشن جو کہ روزانہ بیس لاکھ لوگوں کی نقل و حرکت کا ذمہ دار محکمہ ہے، نے ان تعطیلات میں مسافروں کی تعداد میں 40 فیصد اضافے کا امکان ظاہر کیا ہے۔

نیویارک میں بڑے ریلوے اسٹیشنز پر پولیس اہلکاروں کی اضافی نفری گشت کرے گی۔ اتوار کو پولیس نے شہر کے زیر زمین ریل نظام میں حملہ آوروں سے نمٹنے کے لیے مشقیں بھی کیں۔

نیویارک کے گورنر اینڈریو کیومو نے کہا ہے کہ شہری کو ایک نئی "ایپلیکیشن" ڈاونلوڈ کرنے کا کہا ہے جس سے دہشت گردی سے نمٹنے کی قابلیت کو بڑھانے میں مدد مل سکتی ہے۔

"کچھ دیکھو، کچھ بھیجو" نامی یہ ایپلیکشن شہریوں کو یہ موقع فراہم کرے گی کہ وہ جیسے ہی کہیں کوئی مشکوک سرگرمی دیکھیں اس بارے میں اطلاع کریں۔

ایک اندازاے کے مطابق یوم تشکر کی تعطیلات میں چار کروڑ 69 لاکھ افراد 50 میل یا اس سے زائد فاصلے کا سفر کریں گے، جو کہ گزشتہ برس اس دوران محو سفر لوگوں کی تعداد سے تین لاکھ زائد ہے۔

ان میں سے لگ بھگ چار کروڑ امریکی خود ڈرائیو کریں گے جب کہ 36 لاکھ اپنے منزل پر پہنچنے کے لیے فضائی سفر کریں گے۔

XS
SM
MD
LG