رسائی کے لنکس

تھائی لینڈ: نائب وزیر اعظم کے خلاف مقدمے تک مظاہرین کا منشتر ہونے سے انکار


تھائی لینڈ: نائب وزیر اعظم کے خلاف مقدمے تک مظاہرین کا منشتر ہونے سے انکار

تھائی لینڈ: نائب وزیر اعظم کے خلاف مقدمے تک مظاہرین کا منشتر ہونے سے انکار

تھائی لینڈ کے حکومت مخالف مظاہرین نے، جو وسطی بنکاک پر قابض ہیں، کہا ہے کہ وہ اس وقت تک منتشر نہیں ہوں گے جب تک ملک کے نائب وزیر اعظم پران کی تحریک کے خلاف مہلک پکڑ دھکڑ کے الزام میں مقدمہ نہیں چلایا جاتا۔

ماہرین کے لیڈر نتاوت سائیکوا نے پیر کے روز کہا کہ مظاہرین، جو سرخ پوشوں کے نام سے موسوم ہیں، اس وقت تک اپنے گھروں کو نہیں جائیں گے جب تک نائب وزیر اعظم سوتھپ تھانگ سوبان لازمی طور پر خود کو پولیس کے حوالے نہیں کردیتے۔

مسٹر سوتھپ اس وقت سکیورٹی کے انچارج تھے جب 10 اپریل کو بنکاک میں تھائی فوجیوں نے سرخ پوشوں کے دھرنے کے ختم کرانے کے لیے ایک ناکام کارروائی کی تھی۔ فوجیوں اور مظاہرین کے درمیان لڑائی میں 25 افراد ہلاک اور سینکڑوں زخمی ہوئے تھے۔

سرخ پوشوں نے مارچ کے وسط سے بنکاک کے مرکزی تجارتی علاقے پر قبضہ کیا ہوا ہے اور وہ موجودہ حکومت کی جگہ ، جسے وہ اشرافیہ اور غیر جمہوری حکومت سمجھتے ہیں، نئی حکومت لانے کے لیے جلد انتخابات کرانے کا مطالبہ کررہے ہیں۔

مسٹر نتاوت نے کہا کہ سرخ پوشوں نے حکومت کی جانب سے اس تجویز کو قبول کرلیاہے کہ 14 نومبر کے انتخابات کی جانب پہلے قدم کے طور پر ستمبر کے آخر میں پارلیمنٹ کو تحلیل کردیا جائے گا۔ لد انتخابات کی تجویز تھائی وزیر اعظم ابھیشیت وجے جیوا کی جانب سے پیش کیے گئے ایک مصالحاتی منصوبے کا حصہ ہے۔

XS
SM
MD
LG