رسائی کے لنکس

بینکاک میں بلوے: تھائی وزیرِ اعظم کا امن بحال کرنے کا عہد


تھائی لینڈ میں بدھ کے روز ہونے والے آتشیں حملوں کے ایک سلسلے کے بعد جِس پر دارالحکومت بینکاک میں حکومت مخالف مظاہرین پر شدید فوجی کارروائی کا آغاز کیا گیا، وزیرِ اعظم ابھیشت وجاجیوا نے ملک میں امن قائم کرنے کا عہد کیا ہے ۔

بدھ کو ٹیلی ویژن پر اعلان میں مسٹر ابھیشت نے قوم کو پھر یقین دہانی کرانے کی کوشش کی کہ اُن کی حکومت ملک کو درپیش سیاسی ہلچل کو کچل دے گی، جو دو ماہ قبل سرخ پوش مظاہرین کے ہنگاموں اور دارالحکومت پر قبضہ جمانے کے بعد شروع ہوئی۔

مظاہرین کے خلاف فوجی کارروائی کے نتیجے میں ہونے والی بد امنی کے بعد حکومت نے بینکاک اور کم از کم 23صوبوں میں بدھ کو رات بھر کا کرفیو نافذ کردیا ۔

اہل کاروں کا کہنا ہے کہ سکیورٹی افواج کو احکامات جاری کر دیےگئے ہیں کہ لوٹ مار یا آتشزدگی میں ملوث افراد کو موقع ہی پر گولی ماردی جائے۔

مظاہرین نے بدھ کے روز دارالحکومت کے طول و ارض میں عمارتوں کو آگ لگا دی، حالانکہ فوجی کارروائی کے بعد سرخ پوش رہنماؤں کی طرف سے ہتھیار ڈالنے کی بات کی گئی تھی۔

کم از کم 17مقامات پر آگ لگائی گئی، جن میں تھائی سٹاک ایکس چینج شامل ہے، جو جنوبی ایشیا کا سب سے بڑا شاپنگ مرکز ہے، سنیما ہال، متعدد بینک اور ایک مقامی ٹیلی ویژن اسٹیشن بھی شامل ہے۔

بلوے دارالحکومت سے باہر پھیل چکے ہیں، جب کہ ادون ثانی اور کھون کائن نامی شمال مشرقی شہروں میں سرکاری عمارتوں پر آتشیں اسلحے سے حملے کیے جارہے ہیں۔

XS
SM
MD
LG