رسائی کے لنکس

پاک بھارت امن کے لیے کیلینڈر کا اجرا

  • شمیم شاہد

عالیہ حریر نے کہا کہ دونوں ملکوں کے رہنے والے بچوں کی سوچ بدلنے کی ضرورت ہے تاکہ پائیدار امن کا حصول ممکن ہو سکے۔

پاکستان اور بھارت کے درمیان امن اور ہم آہنگی کے فروغ کے لیے پشاور میں ایک غیر سرکاری تنظیم نے سال 2017 کے لیے ایک کیلینڈر جاری کیا ہے۔

اس کیلینڈر کے 12 مہینوں کے لیے چھ تصاویر پاکستانی جب کہ چھ تصاویر بھارتی بچوں کی شامل کی گئی ہیں، جن میں امن و دوستی کی عکاسی ہوتی ہے۔

آغاز دوستی نامی تنظیم کی طرف سے یہ کیلینڈر تیار کیا گیا، اس تنظیم کی منتظم عالیہ حریر نے وائس آف امریکہ سے گفتگو میں کہا کہ امن دونوں ملکوں میں رہنے والوں کی ضرورت ہے۔

’’اس کا مقصد سال کے 365 دن پاکستان اور بھارت کے عوام کے درمیان امن، پیار اور محبت کی فضا قائم کرنا ہے۔‘‘

اُنھوں نے کہا کہ دونوں ملکوں کے رہنے والے بچوں کی سوچ بدلنے کی ضرورت ہے تاکہ پائیدار امن کا حصول ممکن ہو سکے۔

’’اس میں کلینڈر میں پاکستان اور بھارت کے مختلف شہروں کے طالب علموں کی پینٹنگ شامل ہے۔۔۔ اُنھوں نے اپنے آرٹ کے ذریعے یہ اظہار کیا ہے کہ وہ پاکستان اور بھارت کے مستقبل کو کس طرح سے دیکھتے ہیں۔‘‘

پاکستان اور بھارت کے درمیان تعلقات کشیدہ رہے ہیں اور حالیہ مہینوں میں اس تلخی میں مزید اضافہ ہے۔

دونوں ہی ایک دوسرے پر اپنے ہاں مداخلت کا الزام عائد کرتے ہیں اور اس بارے میں دونوں جانب سے تند و تیز بیانات بھی سامنے آتے رہے ہیں۔

لیکن اس ساری صورت حال کے باوجود پاکستان اور بھارت میں ایسے حلقے بھی موجود ہیں جو کہ دونوں ملکوں کے درمیان امن کے فروغ کے لیے آواز بلند کرتے رہے ہیں اور پشاور میں امن و محبت کے فروغ کے لیے کیلینڈر کا اجرا بھی اُسی سلسلے کی کڑی ہے۔

XS
SM
MD
LG