رسائی کے لنکس

ٹونی بلیئر قازقستان کے مشیر مقرر


ٹونی بلیئر قازقستان کے مشیر مقرر

ٹونی بلیئر قازقستان کے مشیر مقرر

وسطی ایشیا کے ملک قازقستان کی حکومت نے اعلان کیا ہے کہ اس نے ملک میں بیرونی سرمایہ کاری کے فروغ کے لیے برطانیہ کے سابق وزیرِ اعظم ٹونی بلیئر کی خدمات حاصل کرلی ہیں۔

قازق حکومت کی جانب سے ٹونی بلیئر کی بطورِ مشیر تقرری کا باقاعدہ اعلان پیر کو سامنے آیا ہے۔ حکومتی اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ قازقستان کے صدر نور سلطان نذر بائیوف کی حکومت کو معاشی اصلاحات کے نفاذ میں مدد فراہم کرنے کی غرض سے سابق برطانوی وزیرِاعظم نے ایک مشاورتی گروپ تشکیل دے دیا ہے۔

ٹونی بلیئر کی نئی ذمہ داریوں میں مغربی دنیا کے سامنے قازقستان کا مثبت رخ اجاگر کرنا بھی شامل ہے۔ اطلاعات کے مطابق قازق حکومت انہیں ان کی مشاورت کے عوض لاکھوں ڈالرز معاوضہ ادا کرے گی۔

مسٹر بلیئر کے ہمراہ ان کے سابق مشیر الیسٹر کیمپ بیل اور سابق 'چیف آف اسٹاف' جوناتھن پاول بھی اس نئی ذمہ داری میں اپنے سابق 'باس' کی اعانت کریں گے۔

ٹونی بلیئر کے دفتر نے تصدیق کی ہے کہ سابق وزیرِاعظم قازق حکومت کو مشاورت فراہم کیا کریں گےتاہم ان کے عملے نے معاہدے کی تفصیلات بتانے سے گریز کیا ہے۔

واضح رہے کہ قازقستان 'ایک جماعتی ' نظام کا حامل ملک ہے جہاں تمام اختیارات صدر کی ذات میں مرتکز ہونے کے نتیجے میں ایک طرح کی شخصی آمریت قائم ہے۔

صدر نذر بائیوف 1991ء میں قازقستان کے سوویت یونین سے آزادی حاصل کرنے کے بعد سے ملک پر حکومت کرتے آرہے ہیں اور انہوں نے گزشتہ اپریل میں ہونے والے انتخابات میں 95 فی صد ووٹ حاصل کرنے کا دعویٰ کیا تھا۔

ناقدین کا کہنا ہے کہ قازق حکومت مغرب کے وضع کردہ جمہوری اصولوں کی طرف کم ہی توجہ کرتی ہے۔

اس سے قبل گزشتہ ماہ قازق پارلیمان کے ایوانِ بالا نے ملک میں مذہبی سرگرمیوں پر کڑی پابندیاں عائد کرنے سے متعلق ایک مسودہ قانون کی منظوری دی تھی جس کے تحت سرکاری ادارروں میں نمازوں کے لیے کمرے مخصوص کرنے پر پابندی عائد کردی گئی تھی۔

قانون کے تحت تمام اقلیتی مذہبی تنظیموں کو تحلیل کرتے ہوئے انہیں از سرِ نو حکومت سے اپنی رجسٹریشن کرانے کی ہدایت کی گئی ہے۔ خیال رہے کہ قازقستان کی ایک کروڑ 65 لاکھ آبادی میں لگ بھگ 70 فی صد مسلمان ہیں۔

سیاسی آزادیوں پر نظر رکھنے والی امریکی تنظیم 'فریڈم ہائوس' نے نئے قانون کو "پریشان کن' قرار دیتے ہوئے کہا تھا کہ سیاسی جبر کا شکار قازق شہریوں کو اپنے عقائد کے اظہار اور ان پر آزادانہ عمل کرنے کا حق حاصل ہے۔

XS
SM
MD
LG