رسائی کے لنکس

ٹرانس ایشیا طیارے کے حادثے کے بعد ہوابازوں کی مہارت کا دوبارہ امتحان


ٹرانس ایشیا نے حادثے کے بعد تین دنوں کے لیے اپنی 90 پروازیں منسوخ کر دی تھیں تاکہ اے ٹی آر طیارے کے 71 ہواباز ضروری قرار دیے گئے امتحان میں حصہ لیں سکیں۔

تائیوان کی ٹرانس ایشیا فضائی کمپنی کے وہ ہوابازوں، جو بدھ کو گر کر تباہ ہونے والے طیارے جیسے جہاز اڑاتے ہیں، کی اس سے متعلق مہارت جاننے کے امتحان کا آغاز کیا گیا کیونکہ تفتیش کاروں کے مطابق اس حادثے کی ایک وجہ ہواباز کی غلطی بھی ہو سکتی ہے۔

ٹرانس ایشیا نے بدھ کو حادثے کے بعد تین دنوں کے لیے اپنی 90 پروازیں منسوخ کر دی تھیں تاکہ اے ٹی آر طیارے کے 71 ہواباز تائیوان کی شہری ہوا بازی کی انتظامیہ کی طرف سے ضروری قرار دیے گئے امتحان میں حصہ لیں سکیں۔

طیارے کے گر کر تباہ ہونے سے 40 افراد ہلاک ہو گئے تھے اور 15 کو زندہ بچا لیا گیا جبکہ امدادی ٹیمیں دریائے کیلنگ میں لاپتا ہونے والے تین مسافروں کی تلاش کر رہی ہیں۔

تحقیق کاروں نے جمعہ کو کہا تھا کہ 'اے ٹی آر72- 600' کے دو انجن طیارے کو اوپر اٹھانے کے لیے قوت فراہم نہ کر سکے اور سونگ شن ہوائی اڈے سے اڑان بھرنے کے تھوڑی دیر بعد ہی یہ طیارہ بدھ کی صبح دریا میں گر کر تباہ ہو گیا۔

تائیوان کی شہری ہوا بازی کے تحفظ کی کونسل کے عہدیداروں نے جمعہ کو ایک نیوز کانفرنس میں کہا تھا کہ طیارے کے 'وائس اور ڈیٹا ریکارڈر' سے یہ ظاہر ہوا ہے کہ اڑان بھرنے کے 37 سیکنڈ کے بعد طیارے کے دائیں انجن نے کام کرنا بند کر دیا۔

طیارے کے ایک ہوا باز نے ممکنہ طور پر غلطی سے بایاں انجن بند کر دیا اور اس کو دوبارہ اسٹارٹ کرنے کی کوشش کی۔ تاہم اس سے پہلے کہ ہواباز طیارے کو اسٹارٹ کرتا یہ دریا میں گر کر تباہ ہو گیا۔

ایئر ٹریفک کنٹرولرز کی ریکارڈنگ سے یہ ظاہر ہوتا ہے کہ طیارے کے گرکر تباہ ہونے سے قبل پائلٹ کے آخری الفاظ تھے "مئی ڈے ، مئی ڈے، انجن اچانک بند ہو گیا ہے"۔

انٹرنیٹ پر جاری کی گئی ایک ویڈیو میں دکھایا گیا ہے کہ جہاز کا بایاں پر زمین کی طرف جھکا ہوا تھا اور یہ ایک شاہراہ پر ایک ٹیکسی سے ٹکرانے کے بعد دریا میں گر کر تباہ ہو گیا۔

XS
SM
MD
LG