رسائی کے لنکس

امریکی عدالت نے ویغور مسلمانوں کی اپیل خارج کردی


گوانٹانامو بے قیدخانہ

گوانٹانامو بے قیدخانہ

وہ خلیج گوانٹانامو، کیوبا میں امریکہ کے فوجی جیل میں ہیں

امریکہ کی سُپریم کورٹ نے اُن سات چینی مسلمانوں کی اپیل ردّ کردی ہے جو خلیج گوانٹانامو، کیوبا میں امریکہ کے فوجی جیل میں ہیں۔

عدالتِ عالیہ نے پچھلے سال کہا تھا کہ وہ اپیل کی سماعت کرے گی۔لیکن پیر کے روز اُس نے یہ کہتے ہوئے اُس ارادے کو منسوخ کردیا کہ ویغور مسلمانوں کو دوسرے ملکوں نے اپنے ہاں از سر نو بَسا لینے کی پیش کش کی ہے۔

امریکہ کا محکمہ دفاع کوئى پانچ سال پہلے اس نتیجے پر پہنچا تھا کہ ویغور مسلمان امریکہ کے لیے کوئى خطرہ نہیں ہیں اور وہ ایسے ملک تلاش کرتارہا ہے ، جو انہیں اپنے ہاں رکھنے پر آمادہ ہوں۔ امریکہ نے انہیں واپس چین بھیجنے یا امریکہ میں پناہ گزین کی حیثیت دینے سے انکار کردیا ہے۔

چین سنکیانگ سے تعلق رکھنے والے ان مسلمانوں پر علحدگی پسند ہونے کا الزام عائد کرتا ہے اور اُس نے ان کی واپسی کا مطالبہ کیا ہے۔ ویغور، چین کی مسلمان اقلیت کا حصّہ ہیں اور اُن کی زبان تُرکی سے ملتی جلتی ہے۔

یہ آدمی اُن ویغور مسلمانوں کے بڑے گروپ میں شامل تھے ، جنہیں امریکہ نے 2001 افغانستان پر فوج کشی کے بعد اپنی تحویل میں لے لیا تھا۔

باقی ویغور لوگوں کو البانیہ، برمودا اور پالاؤ میں از سرِ نو آباد کردیا گیا ہے ۔ سوئٹزر لینڈ نے دو ویغور بھائیوں کو قبول کرنے کی پیش کش کی ہے۔

XS
SM
MD
LG