رسائی کے لنکس

اقوام متحدہ کے ایلچی برائے افغانستان، جان کوبیز نے جمعرات کے دِن سبکدوش ہونے والے افغان صدر حامد کرزئی کو بتایا ہے کہ انتخابی جانچ پڑتال کا کام تعطل کا شکار ہوگیا ہے اور کم از کم 10 ستمبر تک ختم نہیں ہو سکتا

اقوام متحدہ کی طرف سے عبداللہ عبداللہ یا اشرف غنی کے افغانستان کے نئے صدر کے طور پر عہدہ سنبھالنے میں تاخیر ہوگئی ہے۔ اُس کا کہنا ہے کہ دو ستمبر سے قبل ووٹوں کی جانچ پڑتال کا کام مکمل کرنا ’ممکن نہیں‘۔

اقوام متحدہ کے ایلچی برائے افغانستان، جان کوبیز نے جمعرات کے دِن سبکدوش ہونے والے افغان صدر حامد کرزئی کو بتایا ہے کہ انتخابی جانچ پڑتال کا کام تعطل کا شکار ہوگیا ہے اور کم از کم 10 ستمبر تک ختم نہیں ہو سکتا۔

بدھ کو عبداللہ کی ٹیم نے مبینہ طور پر دھاندلی زدہ ووٹوں کو طے کرنے کے بارے میں معاملات پر عدم اطمینان کا حوالہ دیتے ہوئے، جانچ پڑتال کے عمل سے اپنے مبصرین واپس بلا لیے تھے۔

بعدازاں، اشرف غنی نے بھی اقوام متحدہ کی درخواست پر ووٹوں کی گنتی سے اپنے مبصرین واپس بلا لیے تھے، جو جانچ پڑتال کے کام میں شریک تھی۔

سبک دوش ہونے والے افغان سربراہ کے ایک ترجمان کے بقول، صدر کرزئی انتخابی عمل کی فوری تکمیل کی کوششوں میں سچے دل سے کوشش کر رہے ہیں‘۔

اعمال فیضی نے کہا کہ، ’مسٹر کرزئی نے پہلے ہی اپنی پیکنگ مکمل کرلی ہے۔ متعدد دیگر افغانوں کی طرح، وہ تھک چکے ہیں‘۔

صدر کرزئی نے کہا ہے کہ افغانستان کے نئے صدر کا عہدہ سنبھالنے کی تقریب دو اگست کی مقررہ اصل تاریخ سے کم از کم ایک ماہ بعد منعقد ہوسکے گی۔

XS
SM
MD
LG