رسائی کے لنکس

عراقی فورسز پر میزائل حملہ 'غلطی' سے ہوا: ایش کارٹر


امریکی وزیر دفاع ایش کارٹر

امریکی وزیر دفاع ایش کارٹر

امریکی فوج کا کہنا ہے کہ اس فضائی کارروائی کے لیے ہدف کی معلومات فلوجہ کے قریب موجود عراقی زمینی فوج کی طرف سے فراہم کی گئی تھیں۔

امریکہ کے وزیر دفاع ایش کارٹر نے کہا ہے کہ عراق میں ایک امریکی فضائی حملے میں دس عراقی فوجیوں کی ہلاکت کا بظاہر "غلطی کا نتیجہ ہے جو دونوں جانب سے ہوئی۔"

کارٹر کا کہنا تھا کہ امریکی لڑاکا طیارے سے داغا گیا میزائل وسطی عراقی شہر فلوجہ کے قریب عراقی فورسز پر گرا تھا۔ یہ علاقہ شدت پسند گروپ داعش کے زیر تسلط ہے۔

عراق کے وزیر دفاع نے بتایا تھا کہ اس فضائی حملے میں جمعہ کو دس فوجی ہلاک ہوگئے تھے۔

امریکی فوج کا کہنا ہے کہ اس فضائی کارروائی کے لیے ہدف کی معلومات فلوجہ کے قریب موجود عراقی زمینی فوج کی طرف سے فراہم کی گئی تھیں۔

ہفتہ کو خلیج میں موجود امریکی جنگی بحری جہاز یو ایس ایس کیرسارج پر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے ایش کارٹر کا کہنا تھا کہ انھوں نے ان ہلاکتوں پر عراقی وزیراعظم حیدر العبادی کو فون کر کے تعزیت کی اور ان کے بقول دونوں نے اس بات پر اتفاق کیا کہ "افسوسناک" واقعے کی تحقیقات کی جائیں گی۔

"جب آپ شانہ بشانہ لڑ رہے ہوں جیسے کہ امریکی اور عراقی فورسز لڑ رہی ہیں، تو ایسی چیزیں ہو جاتی ہیں۔"

لیکن کارٹر کا یہ بھی کہنا تھا کہ انھوں نے اور عراقی وزیراعظم نے داعش کو عراق سے بے دخل کرنے کی مہم کو مہمیز کرنے اور آگے بڑھانے کے عزم کا اظہار کیا۔

"یہ ایسی غلطی کی طرف اشارہ کرتا ہے جو کہ میدان جنگ میں ہو جاتی ہے، ہم اور عراقی فورسز مل کر یہ جنگ لڑ رہی ہیں۔"

ایش کارٹر مشرق وسطیٰ کے دورے پر ہیں اور چند دن قبل انھوں نے بغداد میں وزیراعظم حیدرالعبادی سے ملاقات بھی کی تھی۔

XS
SM
MD
LG