رسائی کے لنکس

قانون سازی پارلیمان کا کام، صدر کو انتظامی اختیار حاصل


ریلی

ریلی

امریکی آئین، صدر کو انتظامی اقدام کا اختیار دیتا ہے، جس کا دارومدار اُن کی دانست پر چھوڑا گیا ہے۔ پناہ گزینوں سے متعلق ملکی پالیسیوں میں تبدیلی لانے کی غرض سے، صدر اوباما یہی اقدام کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں، کیونکہ کانگریس نئے قانون پر سجھوتے تک پہنچنے میں ناکام رہی ہے

بچوں کے امریکی اسکولوں کی درسی کتابوں میں، عشروں سے یہ بات سکھائی جاتی ہے کہ قانون سازی کانگریس کے دونوں ایوانوں کی منظوری سے ہی ہو سکتی ہے، لیکن اُسے تب تک قانون کا درجہ حاصل نہیں ہوتا، جب تک صدر اُن پر دستخط نہ کرے۔

تاہم، امریکی آئین، صدور کو انتظامی اقدام کا اختیار بھی دیتا ہے، جس کا دارومدار اُن کی دانست پر چھوڑا گیا ہے۔ پناہ گزینوں سے متعلق ملکی پالیسیوں میں تبدیلی لانے کی غرض سے، صدر اوباما یہی اقدام کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں، کیونکہ کانگریس نئے قانون پر سجھوتے تک پہنچنے میں ناکام رہی ہے۔

برسہا برس سے، امریکی صدور نے انتظامی احکامات کے ذریعے کئی ایک تبدیلیاں لانے کے اعلانات کیے ہیں، اکثرو بیشتر یہ ایسے فیصلے ہوا کرتے ہیں جن کی طرف، عام آدمی کا دھیان کم ہی جاتا ہے۔ جولائی سے اب تک، مسٹر اوباما نے 10 انتظامی احکامات جاری کیے ہیں، جن میں سے ایک بھی متنازع نہیں۔

باقی باتوں کے علاوہ، اِن احکامات میں امریکہ میں افریقی کاروباری اداروں سے متعلق مشاورتی کونسل تشکیل دینا، وبائی امراض سے متعلق نظرثانی شدہ فہرست، اور الکوہل، تمباکو اور اسلحے کے ایجنٹوں کی خدمات کے حصول سے متعلق درج شرائط شامل ہیں۔

تاہم، چند انتظامی احکامات ایسے بھی تھے جن کے نتیجے میں امریکی تاریخ کو نئی جِلا ملی اور وقت کے اعتبار سے، کچھ متنازع تھے یا منظوری کی میعاد گزرنے کے بعد، تجزیے کی کسوٹی پر متنازعہ قرار دیے گئے۔

صدر فرینکلن روزویلٹ نےجنگ عظیم دوئم کے دوران ایک انتظامی حکم جاری کیا تھا، جس کی بدولت جاپانی نژاد امریکیوں کو زبردستی جداگانہ خیموں میں منتقل کیا گیا تھا، جس اقدام پر، بعدازاں، ملک نے معذرت کی اور متاثرین کو تاوان ادا کیا گیا۔

بعد میں، صدر ہیری ٹرومن نے 1948ء میں ایک انتظامی اقدام کے ذریعے امریکی سلامتی افواج میں نسلی بنیاد پر امتیاز برتنے پر بندش عائد کی؛ اور 1952ء میں محنت کشوں کی ہڑتال کے دوران تمام اسٹیل ملوں کو قومی ملکیت میں لینے کا اعلان کیا۔

صدر ڈوائٹ آئیزن ہوور نے 1957ء میں ملک کے پبلک اسکولوں میں نسلی بنیاد پر علیحدگی کے خاتمے کا حکم صادر کیا۔

مسٹر اوباما ملک کی اِمی گریشن پالیسیوں میں تبدیلی لانے سے متعلق انتظامی حکم نامہ جاری کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں، جس پر اُن کے سیاسی مخالفین کی طرف سے شدید مخالفانہ بیانات سامنے آئے ہیں۔
تاہم، مسٹر اوباما کے مقابلے میں، برسہا برس سے، دیگر امریکی صدور نے کہیں زیادہ انتظامی احکامات جاری کرتے رہے ہیں۔

اِن میں سے متعدد انتظامی احکامات عدالتوں میں چیلنج ہوئے، جنھیں مسترد قرار دیا گیا، جن میں اسٹیل ملوں کو قومیانے کا مسٹر ٹرومن کا اقدام، اور حکومت کی طرف سے اجرت پر خدمات کے حصول کے معاملے پر صدر بل کلنٹن کا انتظامی حکم نامہ شامل ہے۔

اسی طرح، نئے صدور نے اپنے پیش روؤں کے احکامات کو معطل کرنے کے لیے اپنے احکامات کا اجرا کیا؛ جب کہ کانگریس قانون سازی کے ذریعے،اِن اقدامات کو معطل کر سکتی ہے، جب کہ، صدارتی ویٹو کا امکان باقی رہتا ہے۔

XS
SM
MD
LG