رسائی کے لنکس

سفارتی مشن کے اہلکاروں کو ”ہراساں“کرنے پر امریکی تشویش

  • خارج

سفارتی مشن کے اہلکاروں کو ”ہراساں“کرنے پر امریکی تشویش

سفارتی مشن کے اہلکاروں کو ”ہراساں“کرنے پر امریکی تشویش

امریکی سفیر نے یقین دہانی کرائی ہے کہ امریکی سفارتکار اور ان کا عملہ حکومت پاکستان کے ضوابط کی پاسداری کریں گے لیکن ان کے بقول وزارت خارجہ نے ابھی تک طے شدہ طریقہ کار پر عمل نہیں کیاہے

امریکہ نے پاکستان میں اپنے سفارتی مشن کی گاڑیوں کو روکنے اور عملے کو” ہراساں“ کرنے پر پاکستانی وزارت خارجہ سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ صورت حال کو بہتر کرنے میں اپنی ذمہ داریاں پوری کرے تاکہ غیر ملکی اہلکاروں کی حفاظت کو یقینی بنایا جائے۔

وائس آف امریکہ سے ایک انٹرویو میں دفتر خارجہ کے ترجمان عبدالباسط نے کہا ہے کہ اُن کا ملک ایک مشکل صورت حال سے گزر رہا ہے اور اسی تناظر میں غیر ملکی سفارت کاروں کی حفاظت کو یقینی بنانے کے لیے حکومت نے غیر معمولی تدابیر اختیار کی ہیں۔ تاہم اُنھوں نے کہا کہ ایک روز قبل گوادر میں امریکی گاڑی اور اس سوار دو پاکستانی اہلکاروں کو حراست میں لیے جانے کے واقعہ پر اُن کی وزارت نے ایک تفصیلی رپورٹ وزرات داخلہ سے منگوائی ہے تاکہ درست حقائق کو جانا جا سکے ۔

ترجمان نے کہا کہ سفارت کاروں کی گاڑیوں کو حفاظتی نکتہ نگاہ سے جانچ پڑتال کے لیے روکنا اس بات کی غمازی کرتا ہے کہ پاکستان کے قانون نافذ کرنے والے ادارے اپنی ذمہ داریاں چابکدستی سے انجام دے رہے ہیں۔ اُنھوں نے اس توقع کا بھی اظہار کیا کہ غیر ملکی سفارت کار ان کوششوں میں حکومت سے تعاون جاری رکھیں گے۔

ایک سوال کے جواب میں عبدالباسط نے اعتراف کیا ہے کہ امریکی سفارت خانے کی گاڑیوں کو رجسٹرریشن پلیٹس اور دوسری ضروری دستاویزات جاری کرنے کے حوالے سے کچھ معاملات اب بھی حل طلب ہیں جنہیں جلد بات چیت کی ذریعے طے کر لیا جائے گا۔ اُنھوں نے بتایا کہ امریکی سفارتی مشن کی گاڑیوں کو جلد نئی رجسٹریشن نمبر پلیٹس جاری کردی جائیں گی اور یہ انکشاف بھی کیا کہ حفاظتی اقدامات کے سلسلے میں امریکی سفارت خانے نے اپنے طور پر بھی گاڑیوں کی کچھ نمبر پلیٹس بنائی ہیں اور یہ معاملہ بھی دونوں ملکوں کے درمیان زیرغور ہے۔

جمعرات کو امریکی سفارتخانے کی طرف سے جاری ہونے والے ایک بیان میں بتایا گیا ہے کہ پاکستان میں تمام امریکی گاڑیاں پاکستانی حکام کے پاس مناسب طور پر اندراج شدہ ہیں اور تمام متعلقہ قانونی دستاویزات کے ہمراہ سفر کرتی ہیں۔

امریکی سفیر این پیٹرسن نے جمعرات کو کراچی میں ایک تقریب کے دوران اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ پاکستانی وزارت خارجہ غیرملکی سفارت کاروں کی سلامتی کے بارے میں تشویش دور کرنے کے لیے مناسب اقدامات کرنے کی پابند ہے۔ اُنھوں نے یقین دہانی کرائی کہ امریکی سفارت کار اور ان کا عملہ حکومت پاکستان کے ضوابط کی پاسداری کریں گے لیکن ان کے بقول وزارت خارجہ نے ابھی تک طے شدہ طریقہ کار پر عمل نہیں کیا۔

امریکی مشن نے پاکستانی حکومت سے اس مطالبے کو بھی دہرایا کہ مشن کی گاڑیوں کو لائسنس نمبر پلیٹوں کے اجراء کے لیے باہمی طور پر طے شدہ طریقہ کار پر فوری طور پر عمل کیا جائے اور امریکی مشن کی گاڑیوں اور اہلکاروں کو من گھڑت واقعات میں ملوث کرنے کا سلسلہ بند کیا جائے۔

XS
SM
MD
LG