رسائی کے لنکس

اہل کاروں کا کہنا ہے کہ بلوہ کرنے والوں کے خلاف مختلف دفعات کے تحت مقدمہ دائر کیا گیا، جِن میں حملہ، نقب زنی اور چوری کے الزامات شامل ہیں

امریکی ریاست مِزوری میں پولیس کے ہاتھوں ایک غیر مسلح سیاہ فام نوجوان کو گولی لگنے اور ہلاکت کے نتیجے میں احتجاج اور ہنگامہ آرائی کا ایک سلسلہ شروع ہوا۔

اتوار کی رات سینٹ لوئی کے مضافات میں فرگوسن کے قصبے کے قریب ہونے والے اِن واقعات کے دوران، کم از کم 32 افراد کو گرفتار کیا گیا۔

اہل کاروں کا کہنا ہے کہ بلوہ کرنے والوں کے خلاف مختلف دفعات کے تحت مقدمہ دائر کیا گیا، جِن میں حملہ، نقب زنی اور چوری کے الزامات شامل ہیں۔

یہ بلوے اُس وقت شروع ہوئے جب مظاہرین شوٹنگ کے واقع کے مقام کے قریب اکٹھے ہوئے۔

ٹیلی ویژن فٹیج میں دکھایا گیا ہے کہ احتجاج کرنے والوں کے مجمعے نے ہنگامہ آرائی سے نبردآزما ہونے پر مامور پولیس سے مزاحمت کی۔ بعدازاں، جب ابتدائی طور پر اکٹھے ہونے والوں کو منتشر کیا گیا، تو توڑ پھوڑ کرنے والوں نے اسٹورز کو لوٹ مار کا نشانہ بنایا، اور ایک پیٹرول پمپ کو نذر آتش کیا۔

فرگوسن کے میئر، جیمس نولیس نے پُرامن رہنے کی اپیل کی اور مقامی اہل کاروں کی طرف سے تفصیلی اور منصفانہ تفتیش کا وعدہ کیا، حالانکہ فیڈرل بیورو آف انویسٹی گیشن کا کہنا ہے کہ وہ اپنے طور پر واقع کی چھان بین کرے گا۔

اٹھارہ سالہ مائیکل براؤن ہفتے کے روز اُس وقت ہلاک ہوا، جب اُن کی ایک پولیس اہل کار سے مدبھیڑ ہوئی۔ واقعے کی مزید تفصیل واضح نہیں۔

مقامی میڈیا کے مطابق، اِس واقع کے بعد، فرگوسن کی زیادہ تر سیاہ فام آبادی اور سفید فام پولیس فورس کے درمیان تناؤ کا ماحول پیدا ہوگیا۔

XS
SM
MD
LG