رسائی کے لنکس

امریکی سینیٹ کمیٹی میں روس کے ساتھ تجارت بڑھانے کی منظوری

  • واشنگٹن

US Senate

US Senate

اس بل کی منظوری کے بعد امریکی منڈی میں روس پر عائد ان پابندیوں کا خاتمہ ہونے کی راہ ہموار ہوگی جو سرد جنگ کے دور میں نافذ کی گئیں تھیں

امریکی سینیٹ کی مالی کمیٹی نے بدھ کے روز ایک بل کی منظوری دی جس سے روسی مصنوعات پر بھی کم شرح کے انہی محصولات کا اطلاق ہوگا جو دیگر ممالک سے درآمد ہونے والی اشیاء پر لاگو ہوتا ہے۔

اس بل کی منظوری کے بعد امریکی منڈی میں روس پر عائد ان پابندیوں کا خاتمہ ہونے کی راہ ہموار ہوگی جو سرد جنگ کے دور میں نافذ کی گئیں تھیں۔

بل کے حامیوں کا کہناہے کہ اس تازہ اقدام کے نتیجے میں ان دوممالک کے درمیان جو ماضی میں ایک دوسرے کے دشمن تھے، تجارتی حجم جو اس وقت 9 ارب ڈالر سالانہ ہے، دگنا ہونے کی توقع ہے۔

اس بل کی منظوری سے قبل کئی سینیٹرز نے اپنی تقاریر میں کہاتھا کہ امریکہ کو روس کے ساتھ تجارتی تعلقات اس وقت تک معمول پر نہیں لانے چاہیں جب تک وہ شام کو ہتھیاروں کی فراہمی معطل نہیں کرتا۔

سینیٹرز کا کہنا تھا کہ شام میں حکومت اپنے ہزاروں مخالفین کو ہلاک کرچکی ہے۔

لیکن ڈیموکریٹ سینیٹر جان کیری نے اعتراض کرتے ہوئے کہا کہ روس کے ساتھ تجارتی سست روی سے ماسکو کے رویے میں کوئی تبدیلی آنے کی توقع نہیں ہے بلکہ اس کا نقصان الٹا امریکی برآمدکنندگان کو ہوگا۔

قانونی حیثیت حاصل کرنے کے لیے اس بل کو پہلے سینیٹ کی منظوری حاصل کرنا ہوگی ، جس کے بعد اسے ایوان نمائندگان کی ووٹنگ اور صدر براک اوباما کے دستخطوں کے مراحل سے گذرنا ہوگا۔

ادھر روس کی پارلیمنٹ نے عالمی تجارتی تنظیم میں روس کی شمولیت کے حق میں دوٹ دیا ہے جس کے بعد اسے حتمی منظوری کے لیے صدر ولادی میر پوٹن کے پاس دستخطوں کے لیے جائے گا۔
XS
SM
MD
LG