رسائی کے لنکس

تھائی لینڈ مشتبہ ایغور کو تحفظ فراہم کرے: امریکہ


ترجمان میری ہارف

ترجمان میری ہارف

امریکی محکمہ خارجہ کی ترجمان میری ہارف کا کہنا ہے کہ امریکہ کو ان کے بارے میں تشویش ہے اور انہوں نے تھائی لینڈ پر زور دیا ہے کہ ان کی حفاظت کو یقینی بنانے کے ساتھ ساتھ ان کی بینادی انسانی ضروریات کا بھی انتظا م کیا جائے۔

امریکی محکمہ خارجہ نے تھائی لینڈ پر زور دیا ہے کہ وہ اس ہفتے کے اوائل میں ایک جنگل سے دریافت ہونے والے تقریباً 200 لوگوں کی حفاظت کو یقینی بنائے جن کے بارے میں شبہ ظاہر کیا جارہا ہے کہ ان کا تعلق چین کے خود مختار مسلم اکثریتی علاقے سنکیانگ سے ہے۔

حکام کا کہنا ہے کہ یہ افراد جنوبی صوبہ سونگخلا کے جنگل میں ایک الگ تھلگ کیمپ میں رہ رہے تھے اور یہ لوگ پولیس کو ملے تھے۔

حکام ان کی قومیت کا تعین کرنے کی کوشش کر رہے ہیں لیکن شبہ ظاہر کیا جا رہا ہے کہ ان کا تعلق چین کے خود مختار مسلم اکثریتی علاقے سنکیانگ کی ایغور نسل سے ہو سکتا ہے ۔ اس گروپ میں 82 بچے بھی شامل ہیں۔

امریکی محکمہ خارجہ کی ترجمان میری ہارف کا کہنا ہے کہ امریکہ کو ان کے بارے میں تشویش ہے اور انہوں نے تھائی لینڈ پر زور دیا ہے کہ ان کی حفاظت کو یقینی بنانے کے ساتھ ساتھ ان کی بینادی انسانی ضروریات کا بھی انتظا م کیا جائے۔

انسانی حقوق کی بین الاقوامی تنظیم ہیومن رائٹس واچ نے بھی تھائی لینڈ پر زور دیا ہے کہ ان افراد کو واپس چین نہ بھیجا جائے کیونکہ بقو ل ان کے وہاں ایغور نسل کے لوگوں کو ریاستی جبر کا سامنا ہے۔ سنکیانگ گزشتہ کئی سالوں سے ایک مسلمان علحیدگی پسند تحریک کا مرکز بھی رہا ہے۔
XS
SM
MD
LG