رسائی کے لنکس

یاسر نقوی 2007ء میں پہلی بار اوٹووا کے ایک حلقے سے رُکنِ صوبائی اسمبلی منتخب ہوئے تھے

اوٹووا کے ایک معروف وکیل، یاسر نقوی پہلے پاکستانی نژاد شخص ہیں جو کینیڈا میں ایک وزیر مقرر کیے گئے ہیں۔

اُنھوں نے پیر کے دِن صوبہٴ اونٹاریو کی حکومت کے وزیر محنت کی حیثیت سے حلف اٹھایا۔

ٹورنٹو میں اونٹاریو کی حکومت کی نئی سربراہ کیتھلین وِن نے اعلان کیا تھا کہ اُنھوں نے یاسر نقوی کو نئے وزیر کی حیثیت سے اپنی کابینہ میں شامل کر لیا ہے۔

پاکستان میں پیدا ہونے والے یاسر سنہ 2007ء میں پہلی بار اوٹووا کےایک حلقے سے رُکن صوبائی اسمبلی منتخب ہوئے تھے۔

سنہ 1988 میں، وہ اپنے خاندان کے ہمراہ پاکستان سے کینیڈا آکر آباد ہوئے۔ اُس وقت اُن کی عمر 15سال تھی۔

یاسر نقوی نے میک ماسٹر یونیورسٹی سے ’لا‘ کی ڈگری حاصل کی اور ملک کی سیاست میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیا۔

اُن کے والد، انور عباس نقوی بھی پاکستان میں ایک سیاسی کارکن رہے ہیں، اور ’ایم آر ڈی‘ کی تحریک کے دوران، جب اُنھیں کراچی میں گرفتار کیا گیا، اُنھوں نے ملک چھوڑنے کا فیصلہ کیا اور کینیڈا کے ایک چھوٹے سے شہر اوک ویل میں آکر آباد ہوئے۔

یاسر نقوی کے بڑے بھائی، علی نقوی کینیڈا کی حزب مخالف کی سب سے بڑی جماعت، ’نیو ڈیموکریٹک پارٹی‘ کے رُکن ہیں۔

بتایا جاتا ہے کہ رُکن اسمبلی کی حیثیت سے یاسر نقوی نے اونٹاریو قانون ساز اسمبلی میں چار بِل پیش کیے اور وہ سب کے سب منظور کرلیے گئے۔

تبصرے دکھائیں

XS
SM
MD
LG