رسائی کے لنکس

logo-print

برطانوی شہری عراق میں اِغوا کے بعد ایران میں قید



امریکہ کے ایک چوٹی کے جنرل نے ان اطلاعات کی تصدیق کی ہے کہ ایک برطانوی شہری کو دو سال سے بھی پہلے عراق میں اِغوا کرلینے کے بعد ایران لے جایا گیا تھا، جہاں وہ قید رہا۔

جنرل ڈیوڈ پیٹریئس جمعے کے روز بغداد کے ایک دورے میں نامہ نگاروں سے گفتگو کررہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ امریکی عہدے داروں کو یقین ہے کہ یرغمال پیٹر مور نے جو31 مہینےایران میں گزارے، اُن میں سے وہ کم سے کم کچھ عرصے تک ایران میں قید رہا تھا۔

جنرل پیٹریئس نے کہا کہ یہ ابھی تک واضح نہیں ہے کہ آیا مور کے اِغوا میں ایران کے پاسدارانِ ابقلاب کا کوئى ہاتھ تھا۔

کمپیوٹر کے ماہر 36سالہ برطانوی شہری کو بدھ کے روز بغداد میں رہا کردیا گیا تھا۔عراقی پولیس کی وردیوں میں ملبوس جنگجوؤں نے مور اور اُس کے چار برطانوی باڈی گارڈز کو 2007ء میں بغداد میں وزارتِ مالیات کی عمارت کے باہر پکڑ لیا تھا۔

خیال کیا جاتا ہے کہ اُس کے چاروں باڈی گارڈ ہلاک ہوگئے ہیں۔ اُن میں سے تین کی میّتیں پچھلے ہفتے برطانیہ بھیج دی گئى تھیں۔

XS
SM
MD
LG