رسائی کے لنکس

logo-print

چین حالیہ کشیدگی بھلا کر امریکہ سے تعلقات میں بہتری کا خواہاں


چین حالیہ کشیدگی بھلا کر امریکہ سے تعلقات میں بہتری کا خواہاں

چینی وزیر خارجہ ینگ جی چی نے اتوار کو صحافیوں سے باتیں کرتے ہوئے کہا ہے کہ امریکہ اور چین کو حالیہ کشیدگی بھلا کر دوطرفہ تعلقات کو معمول پرلانے کے لیے مل کر کام کرنا چاہیے۔ اُنھوں نے ایک بار پھر کہا کہ اُن کا ملک تائیوان کو ہتھیاروں کی فروخت اور گذشتہ ماہ صدر باراک اوباما کی تبت کے جلاوطن رہنما دلائی لاما سے ملاقات کی امریکی پالیسی کی مخالفت کرتا ہے۔

چینی وزیر خارجہ نے کہا کہ اِن واقعات نے دو طرفہ تعلقات کو بُری طری متا ثر کیا ہے لیکن چین اِس کا ذمہ دار نہیں۔ اُنھوں نے کہا کہ امریکہ کو تبت اور تائیوان کے معاملات پر چین کے مفادات کا احترام کرنا چاہیے اور انھیں یقین ہے کہ واشنگٹن چینی مفادات اور بڑے خدشات سے بخوبی آگاہ ہے۔

چین نے جنوری میں امریکہ کے ساتھ فوجی تبادلوں کو اُس وقت معطل کردیا جب امریکی انتظامیہ نے تائیوان کو چھ اعشاریہ چارارب ڈالر مالیت کا جدید اسلحہ فروخت کرنے کا اعلان کیا۔

چینی حکومت نے ایسی امریکی کمپنیوں پر پابندیوں کی دھمکی بھی دی تھی جو تائیوان کو ہتھیار بیچنے کے اس معاہدے میں شامل ہیں لیکن ابھی تک اس فیصلے پر عمل درآمد نہیں کیا گیا ہے۔

XS
SM
MD
LG