رسائی کے لنکس

logo-print

پرویز خٹک انتخابات میں مبینہ دھاندلی کی خصوصی کمیٹی کے سربراہ مقرر


وزیراعظم عمران خان نے وزیر دفاع پرویز خٹک کو انتخابات میں مبینہ دھاندلی کی خصوصی کمیٹی کا سربراہ مقرر کردیا ہے۔یہ کمیٹی سال 2018 کے انتخابات کے دوران اپوزیشن کی طرف سے عائد کردہ دھاندلی کے الزامات کی جانچ پڑتال کرے گی،

وزیراعظم عمران خان نے انتخابات میں مبینہ دھاندلی کی خصوصی کمیٹی کے لیے وزیر دفاع پرویز خٹک کے نام کی منظوری دی ہے، اس کمیٹی میں اراکین قومی اسمبلی اور سنیٹرز شامل ہوں گے جبکہ حکومت اور اپوزیشن کے 12،12 اراکین کمیٹی کا حصہ ہوں گے۔

اس کمیٹی کے قیام سے قبل حکومت اور اپوزیشن نے اپنے اپنے ممبران کے نام اسپیکر کو بھجوادئیے ہیں، اسپیکر ایوان میں کمیٹی کا باضابطہ اعلان کریں گے اور نوٹیفیکیشن جاری ہونے کے بعد کمیٹی کام شروع کرے گی، کمیٹی اپنے پہلے اجلاس میں ٹی او آرز طے کرے گی۔

پیپلزپارٹی کی جانب سے جن ارکان کے نام دیئے گئے ان میں خورشید شاہ، راجہ پرویز اشریف اور نوید قمر شامل ہیں جبکہ مسلم لیگ (ن) کی جانب سے احسن اقبال، رانا ثناء اللہ ، رانا تنویر اور مرتضی جاوید عباسی کے نام شامل ہیں۔

اپوزیشن کی طرف سردار اختر مینگل اور جمعیت علمائے اسلام کے مولانا عبدالواسع بھی شامل ہیں۔ کمیٹی میں اپوزیشن اور حکومت کے ارکان مساوی ہوں گے۔

مسلم لیگ (ن) سمیت تمام اپوزیشن جماعتوں نے عام انتخابات میں دھاندلی کے الزامات عائد کرتے ہوئے تحقیقات کے لیے پارلیمانی کمیشن بنانے کا مطالبہ کیا تھا جس پر 18 ستمبر کو وزیر خارجہ اور تحریک انصاف کے وائس چیئرمین شاہ محمود قریشی نے مبینہ دھاندلی کی تحقیقات کے لیے خصوصی پارلیمانی کمیٹی کے قیام کی تحریک پیش کی جسے ایوان نے متفقہ طور پر منظور کرلیا تھا۔

XS
SM
MD
LG