رسائی کے لنکس

logo-print

چین ایران کے خلاف پابندیوں کے مذاکرات میں شرکت کرے گا


چین ایران کے خلاف پابندیوں کے مذاکرات میں شرکت کرے گا

چین نے یہ تصدیق کی ہے کہ وہ ایران کی جوہری سرگرمیوں کے خلاف اقوام متحدہ کی جانب سے پابندیوں کے ایک نئے ممکنہ مرحلے کےسلسلے میں منعقد ہونے والے مذاکرات میں امریکہ اور دوسری عالمی قوتوں کے ساتھ شرکت کرے گا۔

اس معاملے پر جمعرات کے روز نیویارک میں امریکہ، چین، برطانیہ ، فرانس اور جرمنی کے راہنما ؤں کے درمیان گفت و شنید ہوگی۔

چین ایران کے خلاف نئے تعزیری اقدامات کے حق میں نہیں ہے۔

بیجنگ میں وزارت خارجہ کے ایک ترجمان نے جمعرات کے روز تصدیق کی کہ چین پابندیوں سے متعلق مذاکرات میں حصہ لے گا لیکن ترجمان کا کہنا تھا کہ چین کا اب بھی یہ خیال ہے کہ اس سلسلے میں گفت و شنید ہی آگے بڑھنے کا بہترین راستہ ہے۔ اس مسئلے پر چین کا نقطہ نظر اس لیے اہم ہے کہ وہ ویٹو پاور رکھنے والا اقوام متحدہ کا ایک مستقل رکن ہے۔

اقوام متحدہ کے لیے امریکی سفیر سوزن رائس نے جمعرات کے روز کہا کہ اس معاملے پر ایک بین الاقوامی گروپ تیزی سے کام کررہاہے اور چند ہفتوں کے اندر ایران کے خلاف کسی ایکشن کی توقع ہے۔رائس نے اس بارے میں کچھ کہنے سے انکار کیا کہ مذاکرات کتنے طویل ہوسکتے ہیں۔

عالمی طاقتوں کا خیال ہے کہ ایران خفیہ طورپر جوہری ہتھیار تیار کرنے کی کوشش کررہا ہے۔ تہران اس کی تردید کرتا ہے۔

XS
SM
MD
LG