رسائی کے لنکس

logo-print

کنٹرول لائن پر گولہ باری سے طالب علم کی ہلاکت پر احتجاجي مظاہرہ


پاکستانی کنٹرول کے کشمیر کے ضلع کوٹلی کے ایک سرحدی علاقے میں سرحد پار سے گولہ باری میں طالب علم کی ہلاکت کے خلاف مظاہرہ۔ 27 فروری 2018

روشن مغل

پاکستان کے زیر انتظام کشمیر میں حکام نے بتایا ہے کہ جنوبی ضلع کوٹلی میں نکیال سیکٹر کے ایک سرحدی دیہات پر بھارتی فوج کی فائر بندی لائن پار سے منگل کے روز کی جانے والی گولہ باری میں ایک طالب علم ہلاک ہو گیا۔

پولیس کے مطابق 13سالہ زین منگل کی صبح اس وقت گولہ باری کی زد میں آیا جب وہ سالانہ امتحان میں شرکت کے لیے سکول جا رہا تھا۔

گولہ باری میں گاؤں گھب کے تین دیگر افراد بھی زخمی ہوئے۔

زین کی ہلاکت کے بعد نکیال میں سینکڑوں افراد نے دو طرفہ گولہ باری کے خلاف احتجاج کیا۔

مظاہرین نے زین کی میت اٹھا کر گولہ باری کے خلاف نعرے لگاتے ہوئے نکیال بازار کا چکر لگایا اور ایک مصروف چوک میں دھرنا دیا۔

مظاہرے میں شامل نکیال کے شہنواز علی وائس آف امریکہ سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سرحدی علاقوں کے عوام کو نعشوں کے تحفے دے جارہے ہیں ۔

مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے دو طرفہ گولہ باری کو فوری طور پر بند کرنے کا مطالبہ کیا۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG