رسائی کے لنکس

'امریکہ کا سفر کرنے والوں کا تفصیلی ڈیٹا فراہم کیا جائے'


واشنگٹن ڈی سی میں امریکہ محکمہ خارجہ کا دفتر۔ فائل فوٹو

روئیٹرز کا کہنا ہے کہ اس خط میں صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے 6 مارچ کے ایکزیکٹو آرڈر کے تحت دنیا بھر کے لیے ویزوں کی جانچ پڑتال کے طریقہ کار کو اختصار سے بیان کیا گیا ہے۔

امریکہ کے محکمہ خارجہ نے تمام ملکوں سے کہا ہے کہ وہ اپنے شہریوں کا، جو امریکہ جانا چاہتے ہیں، تفصیلی ڈیٹا فراہم کریں تاکہ امریکی عہدے دار یہ طے کر سکیں کہ ان شہریوں سے دہشت گردی کا تو کوئی خطرہ نہیں ہے۔

خبررساں ادارے روئیٹرز نے جمعرات کے روز یہ خبر ایک سفارتی خط کے حوالے سے دیتے ہوئے بتایا کہ یہ خط ایک روز پہلے تمام امریکی سفارت خانوں کو بھیجا گیا تھا۔

روئیٹرز کا کہنا ہے کہ اس خط میں صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے 6 مارچ کے ایکزیکٹو آرڈر کے تحت دنیا بھر کے لیے ویزوں کی جانچ پڑتال کے طریقہ کار کو اختصار سے بیان کیا گیا ہے۔ صدر کے ایکزیکٹو آرڈر میں چھ مسلم اکثریتی ملکوں کے شہریوں کی امریکہ آمد پر محدود عرصے کے لیے پابندی لگائی گئی تھی۔

اس حکم نامے کا، جسے عدالتوں میں چیلنج کیا گیا تھا، مقصد امریکہ میں ممکنہ دہشت گردوں کا داخلہ روکنا تھا۔

خط میں ان تقاضوں کا ذکر کیا گیا ہے جن پر پورا اترنا امریکہ کا سفر کرنے والوں کے لیے ضروری ہوگا۔

ان میں الیکٹرانک پاسپورٹ کا اجرا، یا اجرا کرنے کا منصوبہ، اور ان پاسپورٹوں کی گمشدگی یا چوری کی صورت میں انٹرنیشنل پولیس ایجنسی انٹرپول کو اطلاع کرنا شامل ہے۔

اس خط میں دنیا بھر کے ملکوں سے یہ بھی کہا گیا ہے کہ وہ امریکہ سفر کرنے والے اپنے شہریوں کی شناخت سے متعلق بائیوگراف تفصیلات، جرائم سے منسلک ریکارڈ بھی فراہم کریں۔

جب اس خط کے بارے میں محکمہ ہوم لینڈ سیکیورٹی سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے اس پر کوئی تبصرہ نہیں کیا۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG