رسائی کے لنکس

ایس ایم کرشنا جولائی میں پاکستان کا دورہ کریں گے

  • سہیل انجم

نومبر 2008ء میں ممبئی پر ہونے والے دہشت گرد حملوں کے بعد بھارت و پاکستان کے مابین جامع مذاکرات کا سلسلہ منقطع ہوگیا تھا لیکن گذشتہ سال یہ سلسلہ دوبارہ شروع ہوا

بھارتی وزیر خارجہ ایس ایم کرشنا 17یا18جولائی کو اسلام آباد کا دورہ کریں گے اور اپنی پاکستانی ہم منصب حنا ربانی کھر کے ساتھ تمام دوطرفہ امور پر تبادلہ خیال کریں گے۔

میڈیا رپورٹوں کے مطابق، دونوں ملکوں کے وزرائے خارجہ دوبارہ شروع ہونے والے جامع مذاکرات کی اب تک کی پیش رفت کا جائزہ لیں گے۔

ایس ایم کرشنا اور حنا ربانی کھر کی اِس ملاقات سے قبل، بھارت اور پاکستان کے مابین 29جون کو نئی دہلی میں سکریٹری خارجہ سطح کے مذاکرات ہوں گے جس کےدوران وزرائے خارجہ مذاکرات کی تیاریوں پر تبادلہ خیال بھی کیا جائے گا۔

دریں اثنا، دونوں ملکوں کے سکریٹری دفاع کے مابین اسلام آباد میں مذاکرات ہو رہے ہیں جن میں سیاچن کے مسئلے پر تبادلہ خیال ہوگا۔

حکومت کے ذرائع نے بتایا ہے کہ وزرائے خارجہ کی سطح پر ہونے والے مذاکرات میں باہمی دلچسپی کے تمام معاملات پر بات چیت ہوگی۔

بھارت میں پاکستان کے ہائی کمشنر شاہد ملک نے دونوں ملکوں کے مابین موجودہ صورتِ حال کو اطمینان بخش قرار دیا ہے کہ دونوں ملک اس موقع سے فائدہ اُٹھائیں اور مذاکرات کے عمل کو جاری رکھیں۔

نومبر 2008ء میں ممبئی پر ہونے والے دہشت گرد حملوں کے بعد بھارت اور پاکستان کے مابین جامع مذاکرات کا سلسلہ منقطع ہوگیا تھا۔

گذشتہ سال یہ سلسلہ دوبارہ شروع ہوا ہےا ور دونوں ملک جامع مذاکرات کے تحت دہشت گردی، کشمیر اور تجارت سمیت متعدد امور پر کئی سطحوں پر بات چیت کر چکے ہیں۔

سیاچن اور سر کریک کے مسئلے پر سکریٹری دفاع اور سکریٹری خارجہ سطح کے مذاکرات میں تبادلہ خیال ہونے والا ہے۔

XS
SM
MD
LG