رسائی کے لنکس

جنوبی بحیرہ چین میں امریکی گشت خطرناک ہے: چین


وو شنگلی

وو شنگلی

سرکاری خبر رساں ایجنسی شینخوا کے مطابق چینی بحریہ کے سربراہ وو شنگلی کا کہنا تھا کہ "ایسے اشتعال انگیز اور خطرناک اقدام چین کی خودمختاری اور سلامتی کے لیے خطرہ اور خطے میں امن و استحکام کے لیے نقصان دہ ہیں۔"

چین کی بحریہ کے سربراہ نے اپنے امریکی ہم منصب کو بتایا ہے کہ رواں ہفتے جنوبی بحیرہ چین میں بیجنگ کے تعمیر کردہ مصنوعی جزائر کے قریب امریکی بحری جہاز کا گشت "خطرناک اور اشتعال انگیز تھا۔"

یہ بیان امریکی بحری آپریشنز ککے سربراہ ایڈمرل جان رچرڈسن اور چینی بحریہ کے سربراہ وو شنگلی کے درمیان عجلت میں منعقد کی گئی ایک گھنٹہ طویل وڈیو کانفرنس کے دوران سامنے آیا۔

امریکی دفاعی حکام نے بات چیت کو پیشہ وارانہ اور بامعنی قرار دیتے ہوئے کہا کہ طرفین نے قواعد و ضوابط پر کاربند رہتے ہوئے تصادم سے بچنے کے لیے باقاعدگی سے مذاکرات کرنے پر اتفاق کیا۔

تاہم چینی حکام کا بات چیت کی تفصیلات سے متعلق بیانیہ تھوڑا مختلف اور سخت ہے۔

جمعہ کو چین کی سرکاری خبر رساں ایجنسی شینخوا کے مطابق وو کا کہنا تھا کہ "ایسے اشتعال انگیز اور خطرناک اقدام چین کی خودمختاری اور سلامتی کے لیے خطرہ اور خطے میں امن و استحکام کے لیے نقصان دہ ہیں۔"

منگل کو امریکی بحریہ کے جنگی جہاز نے جنوبی بحیرہ چین میں بیجنگ کے دعویٰ کردہ علاقے کے 22 کلومیٹر نزدیک گشت کیا تھا جو کہ واشنگٹن کی طرف سے متنازع جزائر میں چینی ملکیتی دعوؤں کے خلاف پہلا بڑا کھلا چیلنج تصور کیا جا رہا ہے۔

چین نے اس گشت پر شدید ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے بیجنگ میں امریکی سفیر کو طلب کر کے اپنا احتجاج ریکارڈ کروایا تھا۔

XS
SM
MD
LG