رسائی کے لنکس

واکس ویگن کمپنی کا 30 ہزار ملازموں کی چھانٹی کا فیصلہ


فائل فوٹو

فائل فوٹو

دنیا کی اس بڑی موٹر ساز کمپنی کے دنیا بھر میں ملازموں کی تعداد تقریباً چھ لاکھ ہے۔

معروف موٹرساز کمپنی واکس ویگن آئندہ چار برسوں میں اپنے 30 ہزار ملازموں کو نکال دی گی۔

واکس ویگن انتظامیہ اور لیبر یونین کے درمیان طے پانے والے سمجھوتے کے تحت 2020 تک کمپنی کے 30 ہزار ملازموں کی چھانٹی کر دی جائے گی۔

کار کنوں کی تعداد میں بڑے پیمانے پر یہ کمی کمپنی کو دوبارہ منافع بخش بنانے اور ڈیزل گاڑیوں میں مضر صحت دھوئیں کے مقررہ معیار سے زیادہ اخراج کے اسیکنڈل سے پہنچنے والے نقصان پر قابو پانے کی کوشش ہے۔

کئی مہینوں تک مشکل مذاكرات کے بعد طے پانے والے اس سمجھوتے سے کمپنی کو اپنے اخراجات میں سالانہ تین ارب 90 کروڑ ڈالر کی بچت ہو گی۔

ملازمتوں میں دو تہائی کٹوتیاں امکانی طور پر واکس ویگن کے جرمنی میں موجود موٹر ساز کار خانوں میں کی جائیں گی ۔ جب کہ باقی ماندہ ملازموں کی چھانٹی امریکہ اور برازیل کی فیکٹریوں سے ہو گی۔

کمپنی نے وعدہ کیا ہے کہ وہ بجلی سے چلنے والی اور ڈرائیور کے بغیر چلنے والی کاروں میں سرمایہ کاری کرے گی جس سے 9 ہزار نئی ملازمتیں پیدا ہو ں گی۔

دنیا کی اس بڑی موٹر ساز کمپنی کے دنیا بھر میں ملازموں کی تعداد تقریباً چھ لاکھ ہے۔

مضر صحت دھوئیں کے اخراج کے اسیکنڈل سے منسلک مقدمات کے لیے کمپنی نے 19 ارب ڈالر کی رقم مختص کی ہے۔ لیکن ماہرین کا کہنا ہے کہ دعوے کرنے والوں کی تعداد اور قانونی اخراجات کے پیش نظر معاوضے کے حقیقی اخراجات کہیں زیادہ ہو سکتے ہیں۔

تبصرے دکھائیں

XS
SM
MD
LG