رسائی کے لنکس

logo-print

نابینا افراد کے لیے ملازمت کے مواقع


نیشنل انڈسٹریز فار بلائنڈز کے برائن ہرلی جوکہ خود بھی نابینا ہیں

امریکہ میں بصارت سے محروم افراد کو ہر طرح کے روزگار کے مواقع میسر ہیں اوراس کی وجہ ہے ایسی ٹیکنالوجی کی ترقی جوبصارت سے محروم افراد کو اپنی پسند کے شعبے کے لیے درکار ضروری تعلیم کے حصول اور مختلف ہنر سیکھنے کے قابل بناتی ہے

ہیلو امریکہ میں شامل ہونے والا سوال ہے اسلام آباد سے روبینہ انجم کا جو بصارت سے محروم بچوں کے لیے قائم المکتوم نیشنل ایجوکیشن سینٹر فار دی بلائنڈ کی پرنسپل ہیں ۔ وہ یہ جاننا چاہتی ہیں کہ امریکہ میں بصارت سے محروم افراد کے لیے کس قسم کے روزگار کے مواقع موجود ہیں ۔

اس سوال کے جواب میں نیشنل انڈسٹریز فار بلائنڈ ز کے ایکسٹرنل افیئرز کے ڈائریکٹر برائین ہرلی نے کہا کہ امریکہ میں بصارت سے محروم افراد کو ہر طرح کے روزگار کے مواقع میسر ہیں اوراس کی وجہ ہے ایسی ٹیکنالوجی کی ترقی جوبصارت سے محروم افراد کو اپنی پسند کے شعبے کے لیے درکار ضروری تعلیم کے حصول اور مختلف ہنر سیکھنے کے قابل بناتی ہے ۔

ان کا کہنا تھا کہ حکومت نے ایسے افراد کی تعلیم اور روزگار کے حصول میں مدد کے لیے ایک نظام قائم کررکھاہے اور اس تعلیمی نظام کے تحت بصارت سے محروم بچوں کے ساتھ اس وقت سے ہی کام شروع کردیا جاتا ہے جب وہ بہت چھوٹے ہوتے ہیں۔

اس نظام میں ان کی پسند کی تعلیم میں ان کی مدد کی جاتی ہے مثلاً اگر کوئی بچہ وکیل بننے کا خواہش مند ہو تو اس بات کو یقینی بنانا کہ سکول اور کالج میں ان کو اس شعبے سے متعلقہ کلاسز میں داخلہ دیا جائے ۔ ان کے لیے ضروری نصابی کتابیں دستیاب ہوں اور اس کے بعد وہ مناسب طریقے سے امتحان بھی دے سکیں ۔

برائن ہرلی کا کہناتھا کہ اپنی تعلیم مکمل کرنے کے بعد جب وہ کسی بھی ادارے میں ملازمت کا آغاز کرتے ہیں تو متعلقہ ادارہ انہیں ٹیکنالوجی سمیت وہ تمام سہولتیں فراہم کرتا ہے جن کی مدد سے وہ اپنے روزمرہ کے امور سرانجام دے سکیں ۔ تمام ادارے اس بات پر متفق ہیں کہ وہ ایسے افراد کو اپنے ملازمتی امور سرانجام دینے کے لیے ضروری سہولتیں فراہم کریں ۔اورجب ادارے انہیں ضروری ماحول مہیا کرنے پر آمادہ ہوتے ہیں تو ایسے افراد اپنی کارکردگی میں دوسروں سے پیچھے نہیں رہتے اور کامیابیاں ان کی ہم سفر بن جاتی ہیں ۔

XS
SM
MD
LG