رسائی کے لنکس

logo-print

مغربی افریقہ ابھی ایبولا سے پاک نہیں ہوا: عالمی ادارہ


عالمی ادارہٴصحت نے ایبولہ کے معاملے پر کافی تسلی بخش اطلاعات دی ہیں۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ جولائی سے اب تک ایبولہ کے کیسز 10 کے ہندسے سے نیچے تھے۔ اِن میں سیئرا لیون کے گاؤں، کمببیا کے آس پاس رپورٹ ہونے والے چار نئے کیسز شامل ہیں، جب کہ گذشتہ ہفتے گِنی میں ایک نیا کیس سامنے آیا ہے

صحت کے عالمی ادارے نے رپورٹ دی ہے کہ مغربی افریقہ کو ایبولہ کے مہلک وائرس سے پاک کرنے کے لیے کافی پیش رفت حاصل ہوئی ہے۔ تاہم، ادارے نے متنبہ کیا کہ ابھی یہ وبا ختم نہیں ہوئی، جب کہ ایبولہ سے متاثرہ ملکوں کو ضرور چوکنہ رہنا ہوگا۔

یہ بات عالمی ادارہٴصحت کے صدر دفتر، جینوا سے ’وائس آف امریکہ‘ کی نامہ نگار، لیزا شلائین نے اپنی رپورٹ میں کہی ہے۔

عالمی ادارہٴصحت نے ایبولہ کے معاملے پر کافی تسلی بخش اطلاعات دی ہیں۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ جولائی سے اب تک ایبولہ کے کیسز 10 کے ہندسے سے نیچے تھے۔ اِن میں سیئرا لیون کے گاؤں، کمببیا کے آس پاس رپورٹ ہونے والے چار نئے کیسز شامل ہیں، جب کہ گذشتہ ہفتے گِنی میں ایک نیا کیس سامنے آیا ہے۔
عالمی ادارہٴصحت کے نائب سربراہ، بروس ایلوارڈ نے کہا ہے کہ گِنی کے معاملے میں صورت حال نے بہتر رُخ اختیار کیا ہے۔

بقول اُن کے، ’آج (بدھ) کے روز تک، گذشتہ ہفتے سے، ایبولہ کا کوئی نیا کیس رپورٹ نہیں ہوا۔ گذشتہ سال کے مقابلے میں، گِنی میں مارچ سے اب تک کا عرصہ بہتر رہا ہے، جب ایبولہ کا کوئی کیس سامنے نہیں آیا۔ واضح طور پر، اس بیماری کے کنٹرول کے لحاظ سے، صورت حال بہتر ہو رہی ہے‘۔

ڈاکٹر ایلوارڈ نے کہا ہے کہ گذشتہ ہفتے مغربی افریقہ میں تین اہم کارنامے سامنے آئے۔ اُنھوں نے بتایا کہ لائبیریا میں گذشتہ 42 دِنوں سے ایبولہ کے کسی کیس کی تصدیق نہیں ہوئی، جس سے معلوم ہوتا ہے کہ وائرس نے دوبارہ سر نہیں اٹھایا۔ جب سے مئی میں علاقے کو وائرس سے پاک ہونے کا دعویٰ سامنے آیا تھا، صرف ایک ہی کیس رپورٹ ہوا ہے۔

اُنھوں نے بتایا کہ سیئرا لیون کے دارالحکومت، فری ٹاؤن میں گذشتہ 21 دِنوں کے دوران ایبولہ کا کوئی نیا کیس رپورٹ نہیں ہوا۔ اور تیسری بڑی کامیابی یہ ہے کہ گِنی کے شہر فورکاریہ میں گذشتہ 21 دِنوں سے اس بیماری کا کوئی نیا کیس سامنے نہیں آیا، جب کہ یہ بدترین متاثرہ خطہ رہا ہے۔

اُنھوں نے بتایا کہ حاصل ہونے والی پیش رفت سے پتا چلتا ہے کہ اس وبا کو کنٹرول کرنے کی حکمتِ عملی کامیاب ثابت ہو رہی ہے۔ لیکن، اُنھوں نے متنبہ کیا کہ وائرس ازخود ختم نہیں ہو رہا ہے۔

ڈاکٹر ایلوارڈ نے کہا ہے کہ عین ممکن ہے کہ رواں سال کے اواخر تک ایبولا کی وبا پر کنٹرول پایا جائے۔ جب یہ ہدف حاصل ہوگا، وہ کہتے ہیں کہ بیماری کے پھر سے بھڑک اٹھنے کے خلاف کاوشوں کی کامیابی کے لیے اگلے 24 ماہ تک بیماری پر مؤثر نگاہ رکھنے کی ضرورت ہوگی۔

XS
SM
MD
LG