رسائی کے لنکس

logo-print

’پاکستان کی علاقائی خود مختاری کے لئے حمایت جاری رکھیں گے‘


فائل فوٹو

چین کا کہنا ہے کہ وہ پاکستان کی سالمیت اور علاقائی خودمختاری کے لئے اپنی حمایت جاری رکھے گا۔

اتور کو چین کے دورے کے آخری دن وزیراعظم عمران خان نے بیجنگ میں چین کے صدر شی جن پنگ اور وزیراعظم لی کی چیانگ سے الگ الگ ملاقاتیں کیں ہیں۔

سرکاری اعلامیے کے مطابق چین کے صدر سے ملاقات میں دونوں رہنماؤں نے باہمی شراکت داری اور تعاون کے فروغ پر اتفاق کیا ہے۔

دونوں ممالک کے رہنماؤں نے علاقائی صورتحال خصوصاً افغانستان پر بات کی اور چین نے خطے اور ہمسایہ ممالک میں دہشت گردی کے خاتمے کے لیے پاکستان کو کوششوں کو سراہا ہے۔

صدر شی جن پینگ سے ملاقات میں عمران خان نے کہا کہ چین پاکستان اقتصادی راہداری کے اگلے مرحلے میں زراعت، صنعت اور اقتصادی بحالی کے منصوبوں پر کام کیا جائے گا۔ عمران خان کا کہنا تھا کہ ان شعبوں میں ترقی سے عوام کا معیار زندگی بھی بلند ہو گا۔

چین کے صدر شی جن پنگ نے کہا کہ چین پاکستان کی علاقائی سالمیت، خود مختاری اور عوام کی خوشحالی کے لئے ہر ممکن تعاون جاری رکھے گا۔

عمران خان نے چینی صدر کو 'بیلٹ اینڈ روڈ' فورم کے کامیاب انعقاد پر مبارکباد بھی دی ہے۔

چار روزہ دورے کے دوران وزیر اعظم عمران خان نے 'بیلٹ اینڈ روڈ' فورم سے بھی خطاب کیا۔
چار روزہ دورے کے دوران وزیر اعظم عمران خان نے 'بیلٹ اینڈ روڈ' فورم سے بھی خطاب کیا۔

وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ پاکستان چین کے مفادات کے تحفظ کے لئے ہر ممکن تعاون جاری رکھے گا۔

بعدازاں وزیر اعظم عمران خان نے چین کے وزیر اعظم لی کی چیانگ سے بھی ملاقات کی۔ اس موقع پر دونوں ممالک کے وزراء پر مشتمل وفود بھی موجود تھے۔

چین کے وزیراعظم نے امید ظاہر کی کہ چین کی سرمایہ کاری سے بننے والے خصوصی اکنامک زونز پاکستان میں صنعتی ترقی کا باعث بنیں گے۔

پاکستان اور چین کے وزراعظم نے سی پیک کے تحت جاری منصوبوں کی رفتار پر اطمینان کا اظہار کیا۔

وزیر اعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ سی پیک پاکستان کی معیشت کے لئے انتہائی اہمیت کا حامل ہے۔

بیجنگ میں پاکستان چین تجارت اور سرمایہ کاری فورم سے خطاب میں وزیر اعظم عمران خان نے چینی سرمایہ کاروں کو پاکستان میں صنعتیں لگانے کی دعوت دی ہے۔

انھوں نے کہا کہ پاکستان آئندہ چند برسوں میں معاشی ترقی کے اہم اہداف حاصل کر لے گا۔

کن معاہدوں پر دستخط ہوئے ؟

پاکستان کی جانب سے جاری اعلامیے کے مطابق وزیر اعظم عمران خان کے چار روزہ دورہ چین کے دوران باہمی تعاون کے شعبوں میں مختلف معاہدوں پر دستخط ہوئے ہیں۔

پاکستان چین آزادنہ تجارت کا معاہدہ کے دوسرے مرحلے پر اتفاق

وزیر اعظم عمران خان کے دورہ چین کے دوران پاکستان اور چین کے مابین فری ٹریڈ کے دوسرے مرحلے کو شروع کرنے پر بھی اتفاق رائے ہوا ہے۔ معاہدوں پر دستخطوں کی تقریب میں دونوں وزراعظم بھی موجود تھے۔

ریلوے ایم ایل ون اور حویلیاں ڈرائی پورٹ

ایم ایل ون منصوبے کے تحت کراچی سے پشاور تک دو طرفہ ریلوے لائن بچھائی جائے گی۔ یہ منصوبہ سی پیک کے تحت ہوگا جس سے پاکستان میں ریلوے کے نظام کو وسعت ملے گی۔

منصوبے کے تحت نئے ٹریک پر ٹرین کی رفتار 160 کلو میٹر فی گھنٹہ ہو گی جس سے پشاور اور کراچی کے سفری دورانیے میں کمی آئے گی۔

طے پانے والے معاہدوں میں سی پیک کے تحت خیبرپختونخوا کے علاقے حویلیاں میں ڈرائی پورٹ کا قیام بھی شامل ہے۔

ارضیاتی تبدیلیوں سے متعلق معاہدہ

پاکسان اور چین نے بحری سائنس اور ارضیاتی تبدیلیوں کے شعبوں میں تعاون کے لئے سمجھوتے پر بھی دستخط کئے ہیں۔ چین کی وزارت قدرتی وسائل اور پاکستان کے ادارہ برائے بحری جغرافیے نے معاہدے پر دستخط کئے۔

تکنیکی شعبے میں تعاون کا معاہدہ

چین اور پاکستان کے حکام نے تکنیکی شعبے میں تعاون، سماجی ترقی کے معاہدوں پر بھی دستخط کئے۔ مختلف چینی اور پاکستانی کمپنیوں کے درمیان تکنیکی شعبے میں تعاون کے سمجھوتوں کو بھی حتمی شکل دی گئی۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG