رسائی کے لنکس

logo-print

بھارت: شمسی توانائی کے شعبے میں اربوں ڈالر کی جاپانی سرمایہ کاری


بھارت کی حکومت نے 2022 تک سورج کی روشنی سے 100 گیگاواٹس بجلی پیدا کرنے کا ہدف مقرر کیا ہے۔

بھارت بڑے پیمانے پر شمسی توانائی سے بجلی پیدا کرنے کے منصوبے پر کام کر رہا ہے اور جاپان سافٹ بینک کی طرف سے اس شعبے کے لیے 20 ارب ڈالر کی مجوزہ سرمایہ کاری سے اُس کے منصوبوں کو بڑی تقویت ملی ہے۔

جاپان کے سافٹ بینک کے سربراہ میسیوشائی سان کہتے ہیں کہ بھارت شمسی توانائی سے بجلی پیدا کرنے والا دنیا کا سب سے بڑا ملک بن سکتا ہے۔

سافٹ بینک کے سربراہ کا کہنا تھا کہ وہ بھارت میں شمسی توانائی کے شعبے میں کم ازکم 20 گیگا واٹس بجلی پیدا کرنے کے لیے سرمایہ کاری کریں گے، جس پر ان کے بقول ایک اندازے کے مطابق 20 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری ہو گی۔

بھارت کی تقریباً ایک چوتھائی آبادی اب بھی بجلی تک رسائی سے محروم ہے اور ملک کے بڑے شہروں میں بجلی کی لوڈشیڈنگ بھی معمول کی بات ہے، اس لیے حکام کے مطابق اُسے بجلی کی پیداور بڑھانے کی اشد ضرورت ہے۔

بھارت کی حکومت نے 2022 تک سورج کی روشنی سے 100 گیگاواٹس بجلی پیدا کرنے کا ہدف مقرر کیا ہے۔ اس وقت بھارت صرف 3 گیگا واٹس بجلی شمسی توانائی سے پیدا کر رہا ہے۔

XS
SM
MD
LG