رسائی کے لنکس

logo-print

سلامتی کونسل کے 15 رکنی وفد کا دورہ افغانستان


اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے 15 رکنی وفد نے اتوار کو کابل کا دورہ کیا، جہاں اُنھوں نے افغان صدر اشرف غنی، چیف ایگزیکٹو عبداللہ عبداللہ اور دیگر عہدیداروں سے ملاقاتیں کیں۔

افغانستان کا دورہ کرنے والے وفد میں اقوام متحدہ میں امریکہ کی سفیر نکی ہیلی بھی شامل ہیں جب کہ اس وفد کی قیادت سلامتی کونسل میں قازقستان کے مستقل مندوب کر رہے ہیں۔

صدارتی دفتر کے ایک عہدیدار نے نام نا ظاہر کرنے کی شرط پر وائس آف امریکہ کو بتایا کہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کا یہ وفد افغان حکومت کی دعوت پر کابل کا دورہ کر رہا ہے۔

سلامتی کونسل کے وفد نے سرکاری عہدیداروں کے علاوہ سول سوسائٹی کے نمائندوں بشمول خواتین نمائندوں سے بھی ملاقاتیں کیں۔

اس موقع پر سکیورٹی کے انتہائی سخت انتظامات کیے گئے تھے جب کہ وسطی کابل اور صدارتی محل کی جانب جانے والے تمام راستے عام ٹریفک کے لیے بند کر دیئے گئے تھے۔

افغان میڈیا کے مطابق 15 رکنی وفد میں چین، برطانیہ، روس اور فرانس کے نمائندے بھی شامل ہیں۔

جب کہ شائع شدہ اطلاعات کے مطابق سلامتی کونسل کے وفد نے افغان قیادت سے ملاقات میں افغانستان میں سکیورٹی کی صورت حال، انسداد دہشت گردی کی کوششوں، بدعنوانی اور منشیات کے خاتمے سمیت امن و مصالحت کے عمل کو تیز کرنے کے علاوہ انتظامی اصلاحات پر بات چیت کی۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG