رسائی کے لنکس

logo-print

مریخ پر معدنیات کی موجودگی کا انکشاف


مریخ پر معدنیات کی موجودگی کا انکشاف

امریکہ کے خلائی ادارے ناسا نے کہاہے کہ مریخ کی تحقیق کے لیے بھیجی جانے والی اس کی روبوٹک گاڑی کے تجربات سے یہ انکشاف ہوا ہے کہ اس سیارے میں ایسے معدنی ذخائر موجود ہیں جن کی تشکیل میں بظاہر پانی کا کردار رہا ہے۔

مریخ کے نالی کی شکل کے جس حصے سے معدنی اجزا ملے ہیں ، اسے ’ہوم اسٹیک ‘ کا نام دیا گیاہے اور اس کی چوڑائی تقریباً انسانی انگوٹھے کےمساوی ہے۔

ناسا کاکہناہے کہ روبوٹک گاڑی کے تجربات سے یہ اندازہ ہوتا ہے کہ یہ معدنی جزو جپسم ہے۔

جپسم زمین پر بھی پایا جاتا ہےجسے عموماً ڈرائی وال اور پلاسٹر آف پیرس بنانے میں استعمال کیا جاتا ہے۔

ناسا کے ماہرین کا قیاس ہے کہ آتش فشانی چٹانوں سے بہہ کر آنے والے پانی نے جپسم کو نالی کی شکل میں جمع کرنے میں کردار ادا کیا تھا۔

ناسا نے اپنا تازہ ترین خلائی جہاز گذشتہ ماہ مریخ کی جانب روانہ کیا تھا۔ ’کیوراسٹی ‘ نامی یہ جہاز اگلے سال کے وسط میں وہاں پہنچے گا اور آتش فشانوں کے دہانوں کے اندر تجربات کرے گا۔

XS
SM
MD
LG