رسائی کے لنکس

logo-print

مغربی کنارے سے فلسطینیوں کے اخراج پر عرب لیگ کا اجلاس


عرب لیگ نے اسرائیل کے اس فیصلے پر غور کرنے کے لیے ایک ہنگا می اجلاس کیا ہے ، جس کا مقصد مقبوضہ مغربی کنارے سے اُن فلسطینیوں کو نکال باہر کرنا ہے ، جن کے پاس اسرائیلی اجازت نامے نہیں ہیں۔

عرب لیگ کے مندوبین نے قاہرہ میں منگل کے روز فلسطینی ایلچی براکات الفرّا کی ایک اپیل کے ساتھ اپنا اجلاس شروع کردیا ہے ۔ اپیل میں انہوں نے اسرائیل کو اس فیصلے پر عمل در آمد سے روکنے لیے فوری اقدام کا مطالبہ کیاہے۔

مصر کی سرکاری خبر رساں ایجنسی مِینا نے فرّا کے حوالے سے کہا ہے کہ اسرائیل کے اس اقدام کا مقصد بین الاقوامی قانون کی خلاف ورزی کرتے ہوئے ہزاروں فلسطینیوں کو اُن کے وطن سے نکال دینا ہے۔

اسرائیلی فوج نے اس بات سے انکار کیا ہے کہ وہ مغربی کنارے سے بہت بڑی تعداد میں فلسطینیوں کو ملک بدر کرنے کا منصوبہ بنا رہی ہے۔اُس کا کہنا ہے کہ نئے قانون کا مقصد فوج کے عدالتی حکام کے ذریعے ملک بدر کیے جانے کے کام کی مناسب نگرانی کو یقینی بنانا ہے۔یہ قانون منگل کے روز سے نافذ العمل ہوگیا ہے۔

شام کے سرکاری ذرائع ابلاغ نے اسرائیلی اعلان کی سخت مذمّت کرتے ہوئے اسے نسلی تطہیر کی پالیسی قرار دیا ہے۔

XS
SM
MD
LG