رسائی کے لنکس

logo-print

روہنگیا پناہ گزینوں کے لیے مزید امداد کی اپیل


روہنگیا پناہ گزین میانمار کی سرحد عبور کر کے بنگلہ دیش میں داخل ہو رہے ہیں۔ فائل فوٹو

انسانی ہمددردی کے أمور سے متعلق انڈر سیکرٹری جنرل اور ہنگامی امداد کے رابطہ کار مارک لوکاک کہتے ہیں کہ ہم اب تک جو کچھ کر چکے ہیں اس سے کہیں زیادہ پیمانے پر امداد کی ضرورت ہے۔

اقوام متحدہ نے میانمر میں تشدد سے بچنے کے لیے فرار ہونے والوں کے کمزور گروپس کے لیے ایک کروڑ 20 لاکھ ڈالر جاری کر دیے ہیں۔

ہنگامی امداد سے متعلق اقوام متحدہ کے رابطہ کار مارک لوکاک نے کہا ہے کہ بنگلہ دیش نے بڑی فیاضی سے پناہ گزینوں کا خیرمقدم کیا ہے ۔ لیکن ا س وقت کیمپوں کی موجودہ صورت حال بہت خراب ہے ۔

انسانی ہمددردی کے أمور سے متعلق انڈر سیکرٹری جنرل اور ہنگامی امداد کے رابطہ کار مارک لوکاک کہتے ہیں کہ ہم اب تک جو کچھ کر چکے ہیں اس سے کہیں زیادہ پیمانے پر امداد کی ضرورت ہے۔ میں نے آج ا س امداد میں اضافے کے لئے ادارے کی جانب سے بارہ ملین ڈالر دینے کرنے کا اعلان کیا ہے ۔ لیکن ضرورت اس بات کی ہے کہ بین الاقوامی برادری کے ہمارے دوست بھی امداد میں اضافہ کریں۔

لوکاک کہتے ہیں کہ پناہ گزینوں کے لیے مزید خوراک، پانی، نکاسئی آب کی سہولیات طبی مدد اور دوسری مدد کی ضرورت ہے ۔

پانچ لاکھ سے زیادہ روہنگیا پناہ گزین اگست کے آخر سے اب تک میانمار میں اپنے گھر بار چھوڑ کر جا چکے ہیں اور لوکاک کہتے ہیں کہ اس بحران کا حل میانمار ہی میں پنہاں ہے ۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG