رسائی کے لنکس

logo-print

ایک ہفتہ قبل جرمنی سے ملک بدر ہونے والے 69 افغانوں پر مشتمل گروپ میں سے ایک شخص کابل کے ہوٹل کے کمرے میں خودکشی کے بعد مردہ پایا گیا۔ یہ بات اہلکاروں نے بدھ کے روز بتائی ہے۔

تئیس برس کے اس شخص کی شناخت ظاہر نہیں کی گئی، جن کی ہلاکت کے بعد جرمن وزیر داخلہ اوسٹ سیفر کے استعفے کا مطالبہ زور پکڑ رہا ہے۔

پناہ نہ ملنے کے بعد، چار جولائی کو اس فرد اور دیگر افغانوں کو افغانستان ملک بدر کیا گیا تھا۔

اُنھیں اُس وقت واپس روانہ کیا گیا جب چانسلر آنگلہ مرخیل کے حکمراں اتحاد سے تعلق رکھنے والے، سیفر نے امیگریشن کے سخت گیر اقدامات کا مطالبہ کیا تھا۔

جس ہوٹل میں یہ افغان شخص مردہ پایا گیا وہ تارکین وطن کی بین الاقوامی تنظیم کی عارضی پناہ گاہ ہے، جہاں افغانستان واپس آنے والے افراد کو رکھا جاتا ہے۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG