رسائی کے لنکس

logo-print

امریکہ میں دودھ کی کھپت میں کمی سے ڈیری انڈسٹری پریشان


کیلی فورنیا میں واقع ایک ڈیری فارم، فائل فوٹو

امریکہ میں گائے کے دودھ کی طلب میں مسلسل کمی ہوتی رہی ہےجس سے اس شعبے سے منسلک سرمایہ کار پریشان ہیں۔ ملک میں دودھ کے سب سے زیادہ پراڈکٹس تیار کرنے والی کمپنی ’ڈین فوڈز‘ نے کہا ہے کہ اس میں اب مزید نقصان اٹھانے کی سکت نہیں رہی اور وہ دیوالیہ فائل کر رہی ہے۔

امریکہ میں سن 2010 میں 55 ارب پاؤنڈ دودھ فروخت ہوا جب کہ پچھلے سال یہ کھپت 47 ارب 70 کروڑ پاؤنڈ رہی جو فروخت میں 13 فی صد کی نمایاں کمی ہے۔

گائے کے دودھ کی فروخت میں کمی کا مطلب یہ نہیں ہے کہ امریکی دودھ کا استعمال چھوڑ رہے ہیں، بلکہ اعداد و شمار یہ بتاتے ہیں کہ بہت سے لوگ دودھ کے متبادل کی طرف جا رہے ہیں اور پودوں سے تیار کیے جانے والے دودھ کا استعمال بڑھ رہا ہے۔ نباتات سے دودھ تیار کرنے والی کمپنیوں کی تنظیم، ’گڈ فوڈ انسٹی ٹیوٹ‘ نے اپنی جولائی کی رپورٹ میں بتایا ہے کہ نباتاتی دودھ کی فروخت میں امریکہ بھر میں 14 فی صد اضافہ ہوا ہے۔

رپورٹ کے مطابق، اپریل 2018 سے اپریل 2019 کے عرصے کے دوران جوار سے تیار کردہ دودھ کی فروخت میں 222 فی صد اضافہ دیکھنے میں آیا۔ ان دنوں گراسری اسٹوروں کے شلفوں پر جوار، بادام، سویابین اور کھوپرے کے دودھ کے پیکٹوں کی نہ صرف تعداد بڑھتی جا رہی ہے، بلکہ ان کی طلب میں بھی اضافہ ہو رہا ہے۔

ایک گراسری اسٹور کے ڈیری کے شعبے میں مختلف اقسام کے دودھ رکھے ہیں۔
ایک گراسری اسٹور کے ڈیری کے شعبے میں مختلف اقسام کے دودھ رکھے ہیں۔

تاہم، نباتات سے دودھ تیار کرنے والی انڈسٹری ابھی بہت چھوٹی ہے اور فی الحال ڈیری انڈسٹری کو اس سے براہ راست کوئی بڑا خطرہ نہیں ہے۔ نباتات سے تیار کیا جانے والا دودھ وہ لوگ استعمال کر رہے ہیں جو اپنی صحت کے معاملے میں بہت فکر مند ہیں اور ایسی غذاؤں کو اپنی خوراک کا حصہ بنانا چاہتے ہیں جو تازہ ریسرچ کے مطابق صحت کے لیے فائدہ مند ہیں۔

ڈیری پراڈکٹس سے متعلق ایک اور رپورٹ یہ ظاہر کرتی ہے کہ مکھن اور پنیر کی کھپت اور فروخت میں اضافہ ہو رہا ہے، جس سے یہ پتا چلتا ہے کہ دودھ کی فروخت میں کمی کا مسئلہ کچھ اور ہے۔

ایسوسی ایٹڈ پریس کی ایک رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ امریکی دودھ کی کمی کا تعلق کئی دوسرے عوامل سے ہے۔ اس کی ایک وجہ قیمتوں کے تنازع پر بعض بڑے فوڈ چین اسٹوز کی جانب سے خرید کے ٹھیکے منسوخ کرنا ہے۔ ایک اور اہم وجہ امریکہ اور چین کا تجارتی جھگڑا ہے، جس کا نتیجہ دونوں ملکوں کا ایک دوسرے کی درآمدات پر اضافی ٹیکسوں کے نفاذ میں نکلا ہے۔

اس سے چین کے لیے دودھ کی برآمدات متاثر ہوئی ہیں۔ اسی طرح میکسیکو کے لیے بھی دودھ کی برآمد محصولات میں اضافے کی وجہ سے کم ہوئی ہے۔ ان تنازعات کا خمیازہ دودھ پیدا کرنے والے کسانوں کو برداشت کرنا پڑ رہا ہے۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG