رسائی کے لنکس

logo-print

ترقی پذیر ملکوں کی ’بغیر شرائط‘ امداد کی جائے: چینی صدر


شی جنپنگ نے کہا ہے کہ یہ تعاون باہمی عزت اور مساوات کی بنیاد پر ہونا چاہیئے۔ اُنھوں نے مزید کہا کہ چین ترقی پذیر ممالک کو بغیر سیاسی شرائط کے امداد کی پیش کش جاری رکھے گا

چینی صدر شی جنپنگ نے کہا ہے کہ دولتمند ممالک کو چاہیئے کہ ترقی پذیر ملکوں کی ’بغیرسیاسی شرائط‘ کے امداد فراہم کریں۔ اُنھوں نے یہ بات بدھ کے روز اجلاس سے خطاب میں کہی، جِس کا مقصد افریقہ اور ایشیا کے درمیان تعلقات مضبوط بنانا ہے۔

تیس سے زائد ملکوں کے سربراہان اِن دِنوں انڈونیشیا کے دارالحکومت، جکارتہ میں جہاں وہ پانچ روزہ ایشیا افریقہ سربراہ اجلاس میں شرکت کر رہے ہیں، جو سنہ 1955کے اجلاس کی یاد میں منعقد ہو رہا ہے، جس میں سرد جنگ کے دور میں غیر وابستہ تحریک (این اے ایم) کی بنیاد رکھی گئی تھی۔


اجلاس کے شرکا کو افریقہ اور ایشیا کے درمیان معاشی تعاون میں مزید اضافے کی توقع ہے۔ اِن دو براعظموں میں فروغ پاتی ہوئی دنیا کی بڑی منڈیاں موجود ہیں یا پھر یہ ملک مزید ترقی یافتہ درجہ حاصل کرنے کے عمل سے گزر رہے ہیں۔

چین افریقہ کا سب سے بڑا تجارتی ساجھے دار ہے، جہاں سے وہ سالانہ اربوں ڈالر کے قدرتی وسائل درآمد کرتا ہے اور سارے براعظم میں جاری اہم ترقیاتی کاموں کے لیے سرمایہ کاری کر رہا ہے، جس میں زیریں ڈھانچے کے بڑے منصوبے اور قرضہ جات کی ادائگی میں نرمی سے متعلق منصوبے شامل ہیں۔

تاہم، ایسے میں جب چین افریقہ میں اپنا اثر و رسوخ بڑھا رہا ہے، مغرب کے متعدد لوگ چین پر انسانی حقوق پر تشویش کے معاملے کر نظرانداز کرنے کا الزام لگاتے ہیں، مثلاً اُن حکومتوں کو بغیر شرائط کے امدادی پیکیج فراہم کیا جا رہا ہے جو مطلق العنان ہیں۔

مسٹر شی نے بدھ کے روز چین کی جانب سے فراہم کی جانے والی بیرونی امداد کی پالیسی کا دفاع کرتے ہوئے کہا ہے کہ دنیا کے امیر ملکوں کی یہ ذمہ داری ہے کہ سیاسی مراعات طلب کیے بغیر ترقی پذیر ملکوں کے ساتھ کیے گئے عہد کو پورا کیا جائے۔

صدر شی نے کہا کہ یہ تعاون باہمی عزت اور مساوات کی بنیاد پر ہونا چاہیئے۔ اُنھوں نے مزید کہا کہ چین ترقی پذیر ممالک کو بغیر سیاسی شرائط کے امداد کی پیش کش جاری رکھے گا۔


مسٹر شی نے چینی قیادت والے ایشئن انفراسٹرکچر انویسٹ منٹ بینک (اے آئی آئی بی) کے فوائد کی طرف دھیان مبذول کرایا، جس کے ناقدین کا کہنا ہے کہ یہ امریکی حمایت والے عالمی بینک، بین الاقوامی مالیاتی فنڈ اور ایشئن ڈولپمنٹ بینک سے مسابقت کے طور پر میدان میں ہے۔


ستاون ملکوں نے، جن میں برطانیہ، جرمنی اور فرانس جیسے امریکی اتحادی بھی شامل ہیں، بطور بانی ارکان کے ایشئن انفراسٹرکچر انویسٹ منٹ بینک (اے آئی آئی بی) میں شامل ہیں۔

انڈونیشیا میں منعقدہ اس اجلاس میں چین، جاپان، برونائی، ملائیشیا، میانمار اور انڈونیشیا کے سربراہان شرکت کر رہے ہیں۔ تاہم، اس اجتماع میں متعدد کلیدی شخصیات غیرحاضر ہیں، جن میں بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی اور جنوبی افریقہ کے صدر جیکب زوما شامل ہیں۔

اس کا پہلا اجلاس سنہ 1955میں جزیرہ نما جاوا کے شہر بندونگ میں ہوا، جس میں متعدد نئے آزاد ملکوں کے سربراہان نے شرکت کی تھی۔

XS
SM
MD
LG