رسائی کے لنکس

logo-print

علیحدگی پسند بلوچوں کو مذاکرات کی دعوت


علیحدگی پسند بلوچوں کو مذاکرات کی دعوت

پاکستان کے وزیر داخلہ رحمن ملک نے کہا کہ بلوچستان میں سرگرم علیحدگی پسند تنظیمیں اگرملک دشمن سرگرمیاں اور تشدد کی کارروائیاں ترک کر دیں تو حکومت اُن سے مذاکرات کے لیے تیار ہے۔

جمعرات کوکراچی میں صحافیوں سے گفتگو میں اُنھوں نے کہا ”وہ کہتے ہیں کہ حکومت تنگ کرتی ہے، حکومت بات نہیں کرتی، میں آج بھی آفر کرتا ہوں تربت ، کوئٹہ یا مند میں جس جگہ بھی وہ کہتے ہیں میں وہاں( مذاکرات کے لیے) بیٹھنے کو تیار ہوں“۔ تاہم اُنھوں نے کہا کہ عسکریت پسندوں کو پاکستان کے آئین اور قومی پرچم کا احترام کرنا ہوگا۔

Aghaz e Huqooq e Balochistan Package ad
Aghaz e Huqooq e Balochistan Package ad

وزیر داخلہ نے دعویٰ کیا کہ وفاقی حکومت کی طرف سے آغاز حقوق بلوچستان کے تحت اعلان کردہ اقدامات سے اُن لوگوں کی دل جوئی ہوئی ہے جو وفاق سے محرومیوں کی شکایت کرتے آئے ہیں اور عوامی خواہشات کے مطابق صوبے میں قائم فوجی چوکیاں بھی ختم کر دی گئیں ہیں۔

حکومت نے گذشتہ سال جن مراعات کا اعلان کیا تھا علیحدگی پسند بلوچ تنظیموں نے فوری طور پر اُنھیں مسترد کردیا تھا۔

XS
SM
MD
LG