رسائی کے لنکس

logo-print

برطانیہ: شام پر جاسوسی پروازوں کی اجازت دینے کا فیصلہ


برطانیہ کی 'رائل ایئر فورس' نے اب تک عراق میں دولتِ اسلامیہ کے ٹھکانوں پر لگ بھگ 40 فضائی حملے کیے ہیں۔

برطانیہ نے دولتِ اسلامیہ کی نقل و حرکت پر نظر رکھنے کے لیے شام کی حدود میں جاسوسی طیاروں کی پروازوں کا اعلان کیا ہے۔

برطانیہ کے وزیرِ دفاع مائیکل فیلن کا کہنا ہے کہ برطانیہ اس مقصد کے لیے مسلح ڈرون اور دیگر جاسوس طیارے استعمال کرے گا لیکن اس انٹیلی جنس آپریشن کے دوران کوئی ہتھیار استعمال نہیں کیا جائے گا۔

منگل کو ارکانِ پارلیمان کے نام لکھے جانے والے اپنے ایک خط میں برطانوی وزیرِ دفاع نے کہا ہے کہ جاسوس طیاروں کی مجوزہ پروازیں شام میں موجود دہشت گردوں سے برطانیہ کی قومی سلامتی کو لاحق خطرات سے نبٹنے کے لیے ضروری ہیں۔

اپنے خط میں مائیکل فیلن نے لکھا ہے کہ برطانیہ دولتِ اسلامیہ کے خلاف امریکہ کی قیادت میں بننے والے اتحاد کا سرگرم رکن ہے لیکن دہشت گرد تنظیم کے خلاف اس کی سرگرمیاں صرف عراق تک ہی محدود ہیں۔

وزیرِ دفاع نے اپنے خط میں کہا ہے کہ شام میں موجود دولتِ اسلامیہ کے شدت پسندوں پر حملوں کے لیے برطانوی حکومت کو پارلیمان کی اجازت درکار ہوگی۔

برطانیہ کی 'رائل ایئر فورس' نے اب تک عراق میں دولتِ اسلامیہ کے ٹھکانوں پر لگ بھگ 40 فضائی حملے کیے ہیں۔

لیکن امریکہ اور اس کے عرب اتحادیوں کی طرح برطانوی فوج نے تاحال شام میں شدت پسند تنظیم کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کی ہے۔

برطانوی حکومت کا موقف ہے کہ اسے برطانوی پارلیمان نے صرف عراق میں دولتِ اسلامیہ کے خلاف کارروائیوں کا اختیار دیا ہے اور فوجی کارروائیوں کو شام تک وسعت دینے کے لیے اسے پارلیمان کی اجازت درکار ہوگی۔

XS
SM
MD
LG