رسائی کے لنکس

logo-print

بروس لی کی شناخت استعمال کرنے کے خلاف ان کی بیٹی عدالت پہنچ گئیں


فائل فوٹو

ماضی کے مشہور مارشل آرٹسٹ اور اداکار بروس لی کی بیٹی نے چین کی ایک فوڈ چین پر ہرجانے کا مقدمہ دائر کر دیا ہے۔ انہوں نے الزام لگایا ہے کہ فوڈ چین ان کے والد کی شناخت بغیر اجازت اپنے لوگو میں استعمال کر رہی ہے۔

خبر رساں ادارے ’رائٹرز‘ نے ایک چینی اخبار ’دی پیپر‘ کے حوالے سے رپورٹ کیا ہے کہ بروس لی کی بیٹی شینون لی امریکی ریاست کیلی فورنیا میں قائم بروس لی انٹرپرائزر نامی کمپنی کی مالک ہیں۔ اس کمپنی نے چینی کھانوں کی مشہور فوڈ چین ریئل کنگ فو پر 21 کروڑ یوآن ہرجانے کا دعویٰ دائر کیا ہے۔

شینون لی کی کمپنی نے ہرجانے کی یہ درخواست بدھ کو شنگھائی کی ایک عدالت میں دائر کی ہے۔ درخواست میں کہا گیا ہے کہ فوڈ چین ان کے والد کی تصویر استعمال کرنا بند کرے اور اسے بغیر اجازت استعمال کرنے کے عوض ہرجانے کے ساتھ مقدمے پر آنے والے اخراجات کی رقم بھی ادا کرے۔

بروس لی کی بیٹی نے دائر درخواست میں کہا ہے کہ ریئل کنگ فو 90 دن میں واضح کرے کہ اس کا بروس لی سے کوئی لینا دینا نہیں۔

ریئل کنگ فو نامی یہ فوڈ چین 1990 میں قائم کی گئی تھی۔ اب چین کے 57 شہروں میں اس فوڈ چین کی آؤٹ لیٹس ہیں۔ ریئل کنگ فو کے لوگو میں پیلے کپڑوں میں ملبوس ایک مرد بنا ہوا ہے جو بروس لی کے مخصوص انداز میں کھڑا ہے۔

دوسری جانب ریئل کنگ فو نے جمعرات کو اپنے ویبو (چین کی سوشل میڈیا سائٹ) اکاؤنٹ پر کہا ہے کہ وہ اس قانونی چارہ جوئی سے حیران ہیں کیوں کہ وہ گزشتہ 15 برسوں سے یہ لوگو استعمال کر رہے ہیں۔ ریئل کنگ فو کی جانب سے کہا گیا ہے کہ انہیں یہ لوگو استعمال کرنے کی منظور حکومتی انتظامیہ نے دی تھی۔

خیال رہے کہ بروس لی ماضی کے مشہور اداکار اور مارشل آرٹ کے ماہر تھے۔ وہ 1973 میں صرف 32 سال کی عمر میں انتقال کر گئے تھے۔ بروس لی کو آج بھی ان کی مشہور مارشل آرٹ فلموں کی وجہ سے یاد کیا جاتا ہے۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG