رسائی کے لنکس

logo-print

چین میں تیل کے اخراج کی جامع تحقیقات کا حکم


چین میں تیل کے اخراج کی جامع تحقیقات کا حکم

چین کے وزیر اعظم وین جیاباؤ نے ملک کے شمال میں امریکی کمپنی کونوکو فلپس کے زیر استعمال ایک تنصیب سے تیل کے اخراج کی جامع تحقیقات کا حکم دیا ہے۔

ماحولیاتی تحفظ کے لیے سرگرم کارکنوں کا کہنا ہے کہ زیر سمندر کنویں سے جون کے اوائل میں شروع ہونے والے تیل کے اخراج نے بوہائی بے کے ساحولوں کو بُری طرح متاثر کیا ہے، اور اس آلودگی کی وجہ سے دارالحکومت بیجنگ کے ساحلی علاقے میں ناصرف ماہی گیری بلکہ زراعت کے شعبے پر بھی منفی اثرات مرتب ہوئے ہیں۔

چین کی کابینہ یعنی سٹیٹ کونسل نے بدھ کو اجلاس کے بعد ایک بیان جاری کیا، جس میں بتایا گیا کہ مسٹر وین کے حکم نامے میں حکام کو ہدایت کی گئی ہے کہ امریکی کمپنی کو ’’ذمہ دار ٹھہرایا جائے اور جن افراد کو نقصانات کا سامنا ہوا ہے اُن کے قانونی حقوق کا تحفظ کیا جائے۔‘‘

اس سے قبل امریکی کمپنی نے اعلان کیا تھا کہ وہ تیل کے اخراج کے باعث ہونے والے نقصانات کے ازالے کے لیے ایک فنڈ تشکیل دے رہی ہے، تاہم فوری طور پر یہ نہیں بتایا گیا کہ کمپنی نے اس فنڈ کے لیے کتنی رقم مختص کی ہے۔

XS
SM
MD
LG