رسائی کے لنکس

logo-print

مظاہروں کے بعد چین میں شمسی توانائی کا پلانٹ بند


مظاہروں کے بعد چین میں شمسی توانائی کا پلانٹ بند

چین میں حکام نے ملک کے مشرقی علاقے میں شمسی توانائی کے ایک پلانٹ کو پیر سے عارضی طور پر بند کرنے کا حکم دیا ہے۔ یہ فیصلہ مقامی آبادی کے چار روزہ احتجاج کے بعد کیا جس میں ان کا الزام تھا کہ یہ پلانٹ کینسر کا باعث بننے والی آلودگی پھیلا رہا ہے۔

مظاہروں کا آغاز جمعرات کو ہوا جب کہ پانچ سو افراد نے زی جیانگ صوبے میں جمع ہو کر حکام سے مطالبہ کیا کہ وہ قریبی دریا میں بڑی تعداد میں مچھلیوں کی ہلاکت کی وضاحت کریں۔ مظاہرین ’جنکو سولر‘ فیکٹری میں گھس گئے اور اس سے پہلے اُنھیں زبردستی وہاں سے نکالا جاتا اُنھوں نے دفاتر کو تباہ اور وہاں کھڑی گاڑیوں کو الٹا دیا۔

ایک دیہاتی نے کہا کہ ان کا خاندان پلانٹ سے خارج ہونے والی آلودگی سے اس قدر خوف زدہ ہے کہ وہ رات کو اپنے گھروں کی کھڑکیاں تک نہیں کھولتے۔

عہدیداروں نے کہا کہ تجزبات سے یہ ثابت ہوا ہے کہ پلانٹ سے بڑی مقدار میں فلورائیڈ کا اخراج دریا میں ہو رہا تھا۔

XS
SM
MD
LG