رسائی کے لنکس

logo-print

اظہر علی کے 205 رنز، وارنر کی تیز رفتار سنچری


پاکستان کا اسکور برابر کرنے کیلئے آسٹریلیا کو مزید 165رنز کی ضرورت ہے جبکہ 8 وکٹیں باقی ہیں۔

میلبورن ٹیسٹ کے تیسرے روز کھیل کے اختتام پر آسٹریلیا نے پاکستان کے 443رنز کے ہدف کا بھرپور انداز میں تعاقب کرتے ہوئے صرف2 وکٹ کے نقصان پر 278 رنز بنا لیے۔

پاکستان کا اسکور برابر کرنے کیلئے اسے مزید 165رنز کی ضرورت ہے جبکہ 8وکٹیں باقی ہیں۔

میزبان ٹیم کی طرف سے اوپنر ڈیوڈ وارنر نے شاندار 144رنز بنائے۔

اس سے قبل پاکستان نے اپنی پہلی اننگز 443 رنز 9 کھلاڑی آؤٹ پر ڈکلیئر کر دی تھی جس میں نائب کپتان اظہر علی کی شاندار ڈبل سنچری بھی شامل ہے۔

میلبورن میں کھیلے جا رہے ٹیسٹ میں پاکستان نے 310 رنز چھ کھلاڑی آؤٹ پر اننگز دوبارہ شروع کی، محمد عامر اپنے اسکور میں صرف ایک رن کا اضافہ کر کے 29رنز پر مچل اسٹارک کی گیند پر وکٹ کیپر میتھیوویڈ کو کیچ دے بیٹھے۔

اظہر علی اور سہیل خان نے آٹھویں وکٹ کی شراکت میں تیز رفتار 118رنز بنا کر اسکور 435 تک پہنچا دیا، اس موقع پر سہیل خان 65 گیندوں پر 65 رنز بنا کر آؤٹ ہو گئے۔

اس دوران اظہر علی نے اپنی ڈبل سنچری مکمل کر کے کئی ریکارڈز اپنے نام کر لیے ہیں۔ اظہر کے ناقابل شکست 205 رنز کسی بھی پاکستانی بلے باز کا آسٹریلیا میں سب سے بڑا انفرادی اسکور ہے۔

اس سے قبل 1972 میں ماجد خان نے 158رنز بنائے تھے جب کہ میلبورن کرکٹ گراؤنڈ پر کسی بھی ایشیائی بیٹسمین کی یہ پہلی ڈبل سنچری اور دنیا کے کسی بھی بیٹسمین کا یہ دوسرا بڑا انفرادی اسکور ہے، ویسٹ انڈیز کے ویوین رچرڈز 1984 میں 208 رنز بنائے تھے۔

اس کے ساتھ ساتھ اظہر علی پاکستان کے پہلے بیٹسمین بن گئے ہیں جنہوں نے کلینڈر ایئر میں ایک سے زائد ڈبل سنچری اسکور کی ہیں۔

2003 کے بعد پہ پہلا موقع ہے جب میلبورن میں دونوں ٹیموں کے اوپنرز نے سنچری اسکور کی ہے، اس سے قبل بھارت کے وریندر سہواگ اور آسٹریلیا کے میتھیوں ہیڈن نے سنچریاں اسکور کی تھیں۔

پاکستان کا اسکور 9 وکٹوں کے نقصان پر 443 رنز پر پہنچا تو کپتان مصباح الحق نے اننگز ڈکلیئر کرنے کا اعلان کر دیا۔

آسٹریلیا کی طرف سے ہیزل ووڈ اور جیکسن برڈ نے تین، تین جب کہ مچل اسٹارک اور نیتھن لیون نے ایک، ایک وکٹ حاصل کی۔

پاکستان کے 443رنز کے تعاقب میں آسٹریلوی اوپنرز نے 46رنز کا آغاز فراہم کیا، پاکستان کو پہلی کامیابی اس وقت ملی جب میٹ رنشا صرف 10رنز بناکر یاسر شاہ کی گیند پر کلین بولڈ ہو گئے۔

اس کے بعد ڈیوڈ وارنر اور عثمان خواجہ نے دوسری وکٹ کی شراکت میں 198رنز بناکر آسٹریلیا کی پوزیشن مستحکم بنا دی۔ اس موقع پر وارنر 144رنز بنا کر وہاب ریاض کی گیند پر سرفراز کے ہاتھوں کیچ آؤٹ ہو گئے، وارنر کی اننگز میں ایک چھکا اور 17چوکے شامل تھے۔

تیسرے روز جب کھیل ختم ہوا تو عثمان خواجہ 95جبکہ کپتان اسٹیون اسمتھ 10رنز کے ساتھ کریز پر موجود تھے۔

XS
SM
MD
LG