رسائی کے لنکس

logo-print

مصر کے الیکشن کمشن کے عہدے داروں نےپیر کے روز یہ تصدیق کی کہ صدارتی انتخاب کے نتائج سے دوسرے مرحلے کے صدارتی الیکشن کا امکان واضح ہوگیا ہے جس میں اخوان المسلمون کے امیداور کا مقابلہ اس امیدوار سے ہوگا جس کے سابق صدر حسنی مبارک کے دور سے گہرے رابطے تھے۔

گذشتہ ہفتے مصر کے پہلے آزادانہ صدارتی انتخاب کے نتائج کے مطابق اخوان المسلمون کے محمد مورسی سر فہرست ہیں اور سابق وزیر اعظم اور سیکولر نظریات رکھنے والے احمد شفیق دوسرے نمبر پر رہے۔ انتخابی عہدے داروں گذشتہ ہفتے جاری کیے جانے والے نتائج کی تصدیق کردی ہے۔

دوسرے مرحلے کا صدارتی انتخاب 16 اور 17 جون کوہوگا اور ووٹروں کو ان دو میں سے کسی ایک امیدوار کے حق میں اپنا فیصلہ دینا ہوگا۔

مورسی نے 57 لاکھ 64 ہزار سے زیادہ ووٹ لیے جب کہ شفیق کو ملنے والے ووٹوں کی تعداد 55 لاکھ پانچ ہزار سے زیادہ تھی۔

تیسرے نمبر پر حامدین صباحی رہے اور انہوں نے 48 لاکھ سے زیادہ ووٹ حاصل کیے۔ جب کہ ان کے بعد اعتدال پسند امیدوار عبدالفتح کو 40 لاکھ سے زیادو ووٹ ملے۔

الیکشن کمشن کا کہناہے کہ پانچ کروڑ اہل ووٹروں میں سے 46 فی صد نے اپنے حق رائے دہی کا استعمال کیا۔

XS
SM
MD
LG