رسائی کے لنکس

logo-print

مکہ میں بھگدڑ سے اٹھارہ افراد زخمی


ایک مقامی اخبار نے صحت کے حکام کے حوالے سے کہا ہے کہ زخمیوں کو موقع پر ہی طبی امداد دے کر فارغ کر دیا گیا اور کسی کو اسپتال داخل کرنے کی ضرورت پیش نہیں آئی۔

خبررساں ادارے اے ایف پی نے سعودی ذرائع ابلاغ کے حوالے سے بتایا ہے کہ مکہ میں مسجد الحرام کے قریب بھگدڑ مچنے سے 18 افراد زخمی ہو گئے ہیں۔

روزنامہ ’الریاض‘ کے مطابق یہ واقعہ جمعہ کی شب اس وقت پیش آیا جب بڑی تعداد میں لوگ عبادت کے لیے جمع تھے۔

اخبار نے صحت کے حکام کے حوالے سے کہا ہے کہ زخمیوں کو موقع پر ہی طبی امداد دے کر فارغ کر دیا گیا اور کسی کو اسپتال داخل کرنے کی ضرورت پیش نہیں آئی۔

رمضان خصوصاً آخری عشرے میں لاکھوں زائرین عمرہ کے لیے مسجد الحرام پہنچتے ہیں۔ آخری عشرے میں طاق راتوں کے دوران عبادت کی خصوصی فضیلت بتائی گئی ہے۔

گزشتہ سال حج کے دوران بھگدڑ مچنے سے دو ہزار سے زائد حاجی ہلاک ہو گئے تھے جو حج کی تاریخ کا سب سے مہلک واقعہ تھا۔

غیر ملکی حکام کے طرف سے جاری ہونے والے اعدادوشمار کے مطابق بھگڈر میں 2411 افراد ہلاک ہوئے جبکہ سعودی عرب نے مرنے والوں کی تعداد 769 بتائی تھی۔

اس واقعے کے بعد سعودی حکومت نے حج کے انتظامات کا جائزہ لے کر کئی نئے حفاظتی اقدامات متعارف کرائے ہیں۔

XS
SM
MD
LG