رسائی کے لنکس

logo-print

یورپی ممالک میں چھ ماہ بعد اسکول دوبارہ کھل گئے


یورپی ممالک میں کرونا وبا کے باعث لگ بھگ چھ ماہ سے بند اسکول دوبارہ کھول دیے گئے ہیں۔ لیکن حکومتوں نے کرونا وائرس سے متعلق سخت ہدایات اور احتیاطی تدابیر پر عمل در آمد کرنے پر بھی زور دیا ہے۔

خبر رساں ادارے 'اے ایف پی' کے مطابق وبائی مرض میں اضافے کے باوجود اسکول کھولے جانے پر کئی اساتذہ اور والدین نے تشویش کا اظہار کیا ہے لیکن حکام نے اس کے باوجود اسکول کھولنے کا فیصلہ کیا۔

فرانس میں 11 سال سے 18 سال تک کی عمر کے تمام طلبہ کو پابند کیا گیا ہے کہ کلاس رومز میں یا باہر ماسک لازمی پہنیں۔

اساتذہ اور عملے کے لیے بھی یہی شرط لازمی ہے جب کہ ہر فرد کو ایک دوسرے سے تقریباً چھ فٹ کی دوری برقرار رکھنا لازمی ہوگی اور وقفے وقفے سے بار بار ہاتھوں کو دھونا یا سینیٹائز بھی کرنا ہوگا۔

بیلجیم میں بھی منگل سے اسکول کھل گئے ہیں جب کہ جرمنی میں اسکول گزشتہ ماہ ہی کھول دیے گئے تھے۔

یونان میں بھی کرونا وائرس کے باعث اسکولوں میں ماسک کا استعمال لازمی قرار دیا گیا ہے۔ وہاں آئندہ پیر سے اسکول کھلیں گے اور ہر کلاس میں 25 بچوں کو بیٹھنے کی اجازت ہوگی۔

انگلینڈ اور ویلز میں چھ ماہ کی بندش کے بعد رواں ہفتے سے اسکول دوبارہ کھل رہے ہیں۔ 11 سے 18 سال کی عمر کے طلبہ اور اساتذہ کے لیے ماسک کا استعمال لازمی قرار دیا گیا ہے۔

اسپین میں حکومت نے چھ سال سے زائد عمر کے بچوں کے لیے ماسک پہننا، دن میں پانچ مرتبہ ہاتھ دھونا اور ایک دوسرے سے پانچ فٹ کا فاصلہ رکھنا لازمی قرار دیا ہے۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG