رسائی کے لنکس

logo-print

فٹبال کے شائقین کی بیتابی پرکاروباری اداروں کی پریشانی


فٹبال کے شائقین کی بیتابی پرکاروباری اداروں کی پریشانی

جنوبی افریقہ میں جمعے کے روزسے شروع ہونے والے فٹ بال کے عالمی کپ کا جہاں دنیا بھر میں لاکھوں شائقین بے چینی سے انتظار کر رہے ہیں وہیں برطانیہ میں کاروباری حلقوں کو اس پریشانی کا سامنا ہے کہ ملک میں ملازمت پیشہ طبقہ ان میچوں کو دیکھنے کے شوق میں اپنے کام سے دور ہو سکتا ہے جس سے اداروں کو ممکنہ طور پر ایک ارب پاونڈ تک کامالیاتی نقصان ہو گا۔

برطانوی چارٹرڈ مینجمنٹ انسٹی ٹیوٹ نے منگل کے روز ایک رپورٹ میں کہا کہ حال میں کیے گئے ایک تجزیے میں روزگار مہیا کرنے والے اداروں میں سے 54 فیصد کا کہنا تھاکہ جون اور جولائی کے مہینوں میں عالمی مقابلے کی انٹرنیٹ پر تشہیر کی وجہ سے ان کے ملازمین کی توجہ بٹی رہے گی۔

ساتھ ہی 53 فیصدکی رائے میں کھیل پر کی جانے والی طویل بحث کے باعث ملازمین اپنے کام پر توجہ مرکوز نہیں رکھ سکیں گے۔ تجزیے میں ہر پانچ میں سے دو روزگار مہیا کرنے والے اداروں نے خدشہ ظاہر کیا کے ملازمین فٹ بال میچ دیکھنے کے لیے کام سے دور رہیں گے۔

لیکن اس ہی تجزیے میں شامل ملازمین میں سے 60 فیصد کا کہنا تھا کہ وہ اپنے کام کو اولین ترجیح دیتے ہیں ۔

ملازمین کی ایک بڑی اکثریت (93 فیصد) کے مطابق اگر ان کی پسندیدہ ٹیم مقابلے سے باہر بھی ہو جاتی ہے تو بھی ان کے کام پر کوئی اثر نہیں پڑے گا کیوں کہ ان کے بقول یہ صرف کھیل ہے۔

البتہ ایک فیصد ملازمین کا کہنا تھا کہ وہ فٹ بال میچ دیکھنے کے لیے بیماری کا بہانا بنا کر چھٹی کرنے کے بارے میں سوچ سکتے ہیں۔

فٹ بال دنیا بھر کے مقبول ترین کھیلوں میں سے ایک ہے اور اس کے لاکھوں شائقین ہر چار سال بعد ہونے والے عالمی مقابلے میں بہت دلچسپی لیتے ہیں۔

XS
SM
MD
LG