رسائی کے لنکس

سنہ 2005ء سے 2014ء تک اُنھوں نے عراق کے صدر کے طور پر فرائض انجام دیے، جب 2012ء اُنھیں پہلی بار دماغ کی رگ پھٹنے کا عارضہ لاحق ہوا، جس کے باعث کئی جسمانی پیچیدگیاں پیدا ہوئیں، اور وہ عہدے سے سبک دوش ہوئے

عراق کے سابق صدر اور عراقی کرد رہنما، جلال طالبانی 83 برس کی عمر میں برلن کے ایک اسپتال میں انتقال کر گئے ہیں۔ یہ بات کُرد حکام نے بتائی ہے۔

سنہ 2003 میں امریکی قیادت میں ہونے والے حملے سے قبل، جس میں صدام حسین کو اقتدار سے ہٹایا گیا، طالبانی عراق کے ایک سب سے بڑے کُرد دھڑے کی سربراہی کیا کرتے تھے۔

پھر 2005ء سے 2014ء تک اُنھوں نے عراق کے صدر کے طور پر فرائض انجام دیے، جب 2012ء اُنھیں پہلی بار دماغ کی رگ پھٹنے کا عارضہ لاحق ہوا، جس کے باعث کئی جسمانی پیچیدگیاں پیدا ہوئیں، اور وہ عہدے سے سبک دوش ہوئے۔

وہ صدر کے عہدے پر فائز ہونے والے پہلے غیر عرب شخص تھے۔ اُنھیں عراق کو متحد کرنے والی شخصیت قرار دیا جاتا ہے۔

طالبانی کی موت ایسے وقت واقع ہوئی ہے جب عراقی کردستان کی علاقائی حکومت نے حکومتِ عراق کے اعتراضات کے باوجود آزادی کے حصول کے لیے ریفرنڈم کرایا ہے۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG