رسائی کے لنکس

logo-print

تمام جرمن یونیورسٹیوں کی ٹیوشن فیسیں ختم


جرمنی کی ساتویں اور فیس وصول کرنے والی آخری ریاست لوئر سیکسنی نے بھی اپنی حدود میں قائم یونیورسٹیوں کی فیس ختم کرنے کا اعلان کیا ہے۔

جرمن یونیورسٹیوں میں داخلے کے خواہش مند طالبعلموں کیلئے خوش خبری ہے کہ جرمنی کی یونورسٹیوں نے اپنی تمام ٹیوشن فیسیں ختم کرنے کا اعلان کردیا ہے۔

اگلے ہفتے سے شروع ہونے والے تعلیمی سال میں جرمنی کی یونیورسٹیاں طالبعلموں سے کسی قسم کی کوئی ٹیوشن فیس نہیں لیں گی۔

یاد رہے کہ جرمنی کی چھ ریاستوں میں یونیورسٹی سطح کی تعلیم پہلے ہی مفت تھی اور اب ملک کی ساتویں ریاست لوئر سیکسنی نے بھی اپنی حدود میں قائم یونیورسٹیوں کی فیس ختم کرنے کا اعلان کیا ہے۔

جرمنی کی 'ہیمبرگ یونیورسٹی' کے سینیٹر ڈوروتھے اسٹیپل فیلڈ کے بقول یونیورسٹیوں کی جانب ٹیوشن فیسوں کی وصولی ایک سماجی ' ظلم' ہے جس کا خاتمہ خوش آئندہ قدم ہے۔

سینیٹر اسٹیپل فیلڈ کے مطابق یونیورسٹیوں میں تعلیم حاصل کرنے کے خواہش مند اکثر طالبعلموں کا پس منظر روایتی نہیں ہوتا اور زیادہ فیسوں کے باعث ایسے طالبعلموں کی حوصلہ شکنی ہوتی ہے۔

برطانوی اخبار 'دی ٹائمز' کی ایک رپورٹ کے مطابق ریاست لوئر سیکسنی میں فیسوں کے خاتمے کے اعلان کے بعد نوجوان لڑکے اور لڑکیاں بغیر کسی ادائیگی کے جرمنی کی تمام یونیورسٹیوں میں اعلٰی معیار کی تعلیم مفت حاصل کرسکیں گے۔

XS
SM
MD
LG